بی جے پی تعمیرنہیں بلکہ توڑپھوڑپریقین رکھتی ہے،دگ وجے سنگھ جوہریونی ورسٹی کی حمایت میں آگے آئے

نئی دہلی:رام پورمیں بنی جوہریونیورسٹی نشانے پرہے۔اب اس معاملے میں کانگریس لیڈر دگ وجے سنگھ نے بھی ٹویٹ کرکے بی جے پی پرحملہ کیاہے۔ اس کے ساتھ جوہریونیورسٹی کوبچانے کی مہم سوشل میڈیا پر شروع ہو گئی ہے۔پیر کو رام پور سیشن کورٹ نے سال 2019 میں جوہر یونیورسٹی کا گیٹ مسمار کرنے کے ایس ڈی ایم کورٹ کے فیصلے کی منظوری دے دی ہے۔اعظم خان کے ساتھ آنے والے دگ وجے سنگھ نے یکے بعد دیگرے دو ٹویٹ کرکے یوگی حکومت پر تنقید کی۔ انہوں نے لکھا ہے کہ بی جے پی صرف انہدام پر یقین رکھتی ہے نہ کہ تعمیرمیں۔ جوہر یونیورسٹی ایک تعلیمی ادارہ ہے۔ اسے توڑنے کی کیا ضرورت ہے؟ صرف اس لیے کہ اعظم خان جی نے اپنی پوری سیاسی زندگی اسے کھڑا کرنے میں صرف کی۔یہی نہیں، انہوں نے ایک اورٹویٹ میں سی ایم یوگی کو چیلنج کیا اور لکھاہے کہ یوگی جی ، اعلیٰ معیارکی نئی یونیورسٹی بنائیں۔ غور کریں کہ جوہر یونیورسٹی کو اعلیٰ معیار کا تعلیمی ادارہ کیسے بنایا جا سکتا ہے۔ اسے تباہ کرنے میں پہل نہ کریں ۔ یہی نہیں ، انہوں نے جوہر یونیورسٹی کو بچانے کے لیے اپنے ٹویٹ میں #SaveJauharUniversity ہیش ٹیگ بھی لگایا ہے۔جوہر یونیورسٹی کو بچانے کے لیے نہ صرف دگ وجے سنگھ ہیش ٹیگ چلا رہے ہیں ، بلکہ بہت سے لوگ سوشل میڈیا پر اس ہیش ٹیگ کے ساتھ ٹویٹ کر رہے ہیں۔شرجیل عثمانی ، جوسی اے اے کے خلاف تحریک کا چہرہ تھے ، نے لکھا ہے کہ یہ لوگ پڑھے لکھے مسلمانوں سے خوفزدہ ہیں۔مسلم ادارے ان کے حملے کی لپیٹ میں ہیں۔