بی جے پی لیڈرکے فارم ہاؤس سے چل رہا تھا سیکس ریکٹ،آگرہ پولیس نے کیا پردہ فاش

آگرہ:آگرہ پولیس نے سیکس ریکٹ کا پردہ فاش کیا ہے۔ پولیس کا دعویٰ ہے کہ یہ ریکیٹ بی جے پی لیڈرکے فارم ہاؤس سے چل رہا تھا۔ بی جے پی رہنما سابق ضلعی صدر رہ چکے ہیں۔بی جے پی رہنما نے اس معاملے میں کسی قسم کی شراکت داری سے انکار کیاہے۔ ادھر مقامی پولیس نے اس معاملے کی تفتیش شروع کردی ہے۔ بی جے پی رہنما نے دعوی کیا ہےکہ انہوں نے اپنا فارم ہاؤس لیز پر دیاتھا، جس شخص کو فارم ہاؤس لیز پر دیا گیا تھا اسے گرفتار کرلیا گیا ہے۔آگرہ کے ایس ایس پی ببلو کمار نے بتایا کہ سٹی پولیس نے شہر میں جاری جنسی ریکیٹ کو بے نقاب کرنے کے لئے ایک آپریشن شروع کیا ہے، جس میں فارم ہاؤس پر چھاپہ مارا گیا تھا۔ ایس ایس پی نے بتایا کہ لڑکیوں کو پہلے اس فارم ہاؤس میں لایا گیا، پھر انہیں شہر کے مختلف ہوٹلوں میں بھیجا گیا۔پولیس کو اس معاملے میں قدآور افراد کے ملوث ہونے کا شبہ ہے، پولیس ان کے کردار کی تحقیقات کر رہی ہے۔ اس معاملے میں پولیس 3 خواتین سمیت کل 9 افراد سے پوچھ گچھ کر رہی ہے۔ پولیس نے ملزم کے خلاف ایف آئی آر درج کرلی ہے۔اس معاملے میں بی جے پی رہنما کا نام سامنے آیا ہے جس نے بتایا تھا کہ پولیس انہیں جان بوجھ کر اس معاملے میں شامل کررہی ہے۔ اس شخص نے بتایا کہ اس نے اپنا فارم ہاؤس سچن، وشنو اور وشال گوئل نامی شخص کو کرایہ پر دے رکھاہے۔ انہوں نے اس معاملے کی تحقیقات کا مطالبہ کیا ہے۔اسی دوران اے ایس پی ببلو کمار نے کہا کہ بی جے پی رہنما کو معلوم تھا کہ ان کے فارم ہاؤس میں کیا ہو رہا ہے؟اس معاملے میں سچن کے علاوہ بشنو وشال، وجئے اور رنویر کو پولیس نے گرفتار کیا ہے۔