بی جے پی کارکن کانڈاکوخون سے خط،یوگی کوہٹانے کی مخالفت

گونڈہ:اترپردیش میں حکومت کی ناکامی کے بعدیوگی کی کرسی پرسوال اٹھ رہے ہیں۔بی جے پی میں بھی ان پرہنگامہ جاری ہے۔اترپردیش کے گونڈہ ضلع میں بی جے پی کارکن ، جو یوگی کے حامی ہیں ، نے پارٹی کے صدر جے پی نڈا کوخون سے ایک خط لکھا ہے ، جس میں یوگی کے وزیراعلیٰ کے عہدے سے ہٹانے کی مخالفت کی ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ اگر سی ایم یوگی کو ہٹا دیا گیا تو وہ لکھنؤ میں بی جے پی کے دفتر کے سامنے خودکشی کریں گے۔سونو ٹھاکر نامی بی جے پی کارکن نے بھی اپنے خط میں یہ الزام لگایاہے کہ ریاستی سطح کے کچھ رہنما یوگی آدتیہ ناتھ کو ہٹانا چاہتے ہیں اور ایسا نہیں ہونا چاہیے۔ میری خودکشی کی ذمہ داری ایسے لیڈروں پر ہوگی۔وہ سی ایم یوگی کے کام سے بہت خوش ہیں اور انہیں یقین ہے کہ ریاستی سطح کے کچھ رہنما ان کے خلاف سازشیں کررہے ہیں اور چاہتے ہیں کہ انہیں وزیر اعلیٰ کے عہدے سے ہٹا دیا جائے۔ یہ معلومات بہت تکلیف دہ ہیں ، لہٰذاسونو ٹھاکر نے اپنے خون سے پارٹی کے قومی صدر جے پی نڈا کو ایک خط بھیجا ہے کہ یوگی آدتیہ ناتھ کو نہیں ہٹایا جانا چاہیے۔