بی جے پی کے بعد جے ڈی یونے ایل جے پی کو’ووٹ کٹواپارٹی‘ کہا

پٹنہ:بہارمیں لوک جن شکتی پارٹی (ایل جے پی) نے این ڈی اے کے حصہ کے طورپر نہیں بلکہ تنہا انتخاب لڑنے کا فیصلہ کیاہے۔بی جے پی اور ایل جے پی کے درمیان اس بارے میں تنائو شروع ہوگیاہے۔ مرکزی وزیر پرکاش جاوڈیکر نے کہا کہ ایل جے پی بہار کے انتخابات میں کوئی اثر نہیں ڈال پائے گی۔ بہار کے انتخابات میں ، ایل جے پی صرف ووٹ کٹوا پارٹی ہی رہے گی۔ بی جے پی کے بعد جے ڈی یو وزیر مہیشور ہزاری نے بھی ایل جے پی کو ووٹ کٹواپارٹی قرار دے کر ماحول کو گرما دیا ہے۔جیسے جیسے انتخابات کی تاریخ قریب آرہی ہے ، قائدین کے مابین لفظی جنگ بھی تیز ہوتی جارہی ہے۔ بہار حکومت میںترقی اورصنعت کے وزیر مہیشور ہزاری نے لوک جن شکتی پارٹی (ایل جے پی) کونشانہ بنایاہے۔ مہیشور ہزاری نے کہاہے کہ چراغ پاسوان کی پارٹی ان انتخابات میں ووٹ کاٹنے کے لیے کام کرے گی۔ ایسی صورتحال میں ترقیاتی کاموں کو مدنظر رکھتے ہوئے مل کر ووٹ ڈالنا چاہیے۔اس کے علاوہ وزیر مہیشور ہزاری نے کہا کہ ایل جے پی ایک ووٹ کاٹنے والی پارٹی ہے اور وہ وزیر اعظم کا نام لے کر عوام کو دھوکہ دے رہی ہے ، وہ بہار کے لوگوں کو جھوٹ بول کر اندھیرے میں رکھ کر جے ڈی یو کے ووٹ کاٹنا چاہتی ہے۔