بی جے پی کے دو ممبران پارلیمنٹ کے خلاف مقدمہ درج،تشددبھڑکانے کا الزام

کولکاتہ:مغربی بنگال میں بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کے لاکٹ چٹرجی اور ارجن سنگھ پر تشدد بھڑکانے کا الزام عائد کیا گیا ہے۔ ممبران پارلیمنٹ پر الزام ہے کہ انہوں نے ہوگلی ضلع کے تلینی پارا گاؤں میں تشدد کو ہوا دیا۔چندر نگر پولیس حکام کے یہاں ممبران پارلیمنٹ کے خلاف مقدمہ درج کیا گیا ہے۔ دونوں اراکین پارلیمنٹ کو ایک نوٹس بھی جاری کیاگیاہے جس میں کہا گیا ہے کہ 22 مئی کو رکن پارلیمنٹ کو اس معاملے میں پیش ہوناپڑے گا۔ رات 12 بجے تشدد کیس میں ان سے پوچھ گچھ کی جائے گی۔ یہ نوٹس انسپکٹر پولیس سوراو بانڈوپادھیائے نے جاری کیا ہے۔دراصل، تلنی پارہ گاؤں میں دوکمیونٹی آمنے سامنے آئی۔میڈیانے جوزہرپھیلایاہے اس کے نتیجے میں پچھلے ہفتے تلینی پارہ گاؤں میں ایک کمیونٹی نے دوسری کمیونٹی کو کورونا کے نام سے خطاب کیا۔ اس کے بعد، دونوں فریقوں میں تصادم ہوا۔ اس دوران، بم پھینکنے کی خبر ملی۔خبر رساں ادارے پی ٹی آئی کے مطابق، تلنی پارہ اور اس کے قریبی چندن نگر اور سری رام پور علاقوں میں بم پھینکے گئے اور دکانوں میں توڑ پھوڑ کی گئی، جس کے بعد پولیس نے شرپسندوں پر صورتحال پر قابو پالنے کے لیے لاٹھی چارج کیا۔ اس واقعے کے سلسلے میں کم از کم 129 افراد کو گرفتار کیا گیا ہے۔