بہار:تیسرے محاذکی سرگرمیاں تیز،سیکولرووٹ میں سیندھ لگانے کی کوشش

پٹنہ:سابق بی جے پی لیڈریشونت سنہاکی قیادت میں بہارمیں تیسرے محاذکی کوششیں تیزہیں۔جن کے آگے پیچھے کچھ انتخابی مسلمان بھی لگے ہیں۔واضح ہوکہ یشونت سنہاسنیئربی جے پی لیڈررہے ہیں جب کہ ان کے بیٹے جینت سنہامودی حکومت میں وزیررہ چکے ہیں اورابھی بھی وہ بی جے پی سے ممبرپارلیمنٹ ہیں۔ایسے میں سمجھاجاتاہے کہ تیسرے محاذکاہنگامہ سیکولرووٹ کوتقسیم کرنے کے لیے کیاجارہاہے۔’اس بار بدلو بہار’’کے عزم کے ساتھ سابق مرکزی وزیر یشونت سنہا کی قیادت میں آج سے 9 دنوں کے لیے جن سنواد یاترا شروع ہو گیا ہے۔منگل کوجے پی کے مجسمہ پر گل پوشی کے بعد پٹنہ سے اس یاترا کا آغاز ہوا۔یشونت سنہا نے اس موقع پر کہا کہ بہار کے سبھی اضلاع میں جن سنواد کے ذریعہ عوام سے جڑیں گے۔اس یاترا میں یشونت سنہا کے ساتھ چل رہے اکلوتا مسلم چہرا جنتا دل راشٹروادی کے قومی کنوینر اشفاق رحمن ہیں۔جوالیکشن کے وقت سرگرم ہوجاتے ہیں۔انہوں نے کہاہے کہ ہم نے عزم لیا ہے کہ ان سرکاروں کو اکھاڑ پھینکیں گے ،جنہوں نے غیر آئینی طور سے سی اے اے قانون بنایا اور اس کی حمایت کی۔لیکن انھوں نے یہ نہیں بتایاہے کہ یشونت سنہااپنے فرزندکوبی جے پی سے کیوں نہیں واپس لارہے ہیں۔جہان آباد میں منعقد جن سنواد سے خطاب کے دوران اشفاق رحمن نے کہا کہ خود ساختہ سیکولر جماعتوں نے مسلمانوں کو صرف ٹھگنے کا کام کیا۔ان کی بنیادی ترقی پر کسی نے توجہ نہیں دی۔72 سال سے صرف مسلمانوں کو ووٹ بینک کی شکل میں استعمال کیا گیا اور مسلمان بھی استعمال ہوتے رہے۔وقت آگیا ہے کہ اب اپنی سیاسی تقدیر مسلمان خود لکھیں۔انہوں نے جیل میں بند سی اے اے ،این آر سی،این پی آر کے خلاف احتجاج کرنے والے تحریک کاروں کی رہاء کی مانگ بھی اٹھائی۔ یاترا کا پہلا پڑاؤ جہان آباد تھا جبکہ رات کا قیام بودھ گیا میں رہا۔بدھ کو یہ یاترا گیا سے اورنگ آباد کے لئے نکلے گی۔ اس بعد سہسرام، بکسر، بھوجپور، گوپال گنج، موتیہاری، مظفر پور،حاجی پور ہوتے ہوئے پٹنہ لوٹ جائے گی۔یاترا میں سابق مرکزی وزیرناگمنی،دیویندرپرساد یادو،بہار کے سابق وزیر نریندر سنگھ،رینو کشواہا،سابق ایم پی ارون کمار شامل ہیں۔