بہار قانون سازکونسل کی صد سالہ تقریب کا افتتاح،نائب وزیراعلی رینو دیوی کی زبان پھر پھسلی

پٹنہ:آج ریاستی وزیراعلی نتیش کمار نے بہار قانون سازیہ کے 100سال مکمل ہونے پر اسمبلی کے توسیعی عمارت کے نو سینٹرل ہال میں شمع روشن کرکے ودھان سبھا بھون صد سالہ تقریب پروگرام کا افتتاح کیا۔چارگھنٹے تک چلنے والے اس پروگرام میں حزب اختلاف کے لیڈر تیجسوی یادوغیر حاضر رہے۔وزیراعلی کے علاوہ بی جے پی کے دونوں نائب وزیراعلی نے خطاب کیا۔بی جے پی کے نائب وزیراعلی رینو دیوی نے اس بار اپنے خطاب میں اسمبلی اسپیکر وجئے سنہا کی جگہ پر وجئے کمار شریواستو کہا۔انہوں نے حزب اختلاف کے رہنما تیجسوی یادو کا بھی نام لیا۔حالانکہ وہ ایوان میں موجود نہیں تھے۔ اس سے قبل بھی رینو دیوی نے جمہوریت کے تیسرے ستون میڈیا کو کہاتھا جو موضوع بحث رہا۔
وزیراعلی نے اپنے خطاب میں کہا کہ سب سے پہلے میں اسمبلی اسپیکر جناب وجئے کمار سنہا جی کا اس صد سالہ تقریبات کے انعقاد کے لیے شکریہ ادا کرتا ہوں۔ بہار اسمبلی اور بہار قانون ساز کونسل پہلے مشترکہ طورسےذیلی مقننہ کہلاتا تھا۔سال 1920 میں بہار اسمبلی عمارت کا کام شروع ہوااور 7فروری 1921 کو اس عمارت کی تعمیر مکمل ہوگئی۔انہوں نے کہا کہ صد سالہ تقریب پروگرام میںجمہوریت میں مقننہ میں ارکان کا کردارپر پرمشورہ کیا گیا۔ اس سے قبل بھی ہم لوگوں نے کئی پروگرام منعقد کئے ہیں۔ 22مارچ کو یوم بہار منایا جاتا ہے۔
اسمبلی کے اسپیکر وجئے کمار سنہا نے کہا کہ آج کا دن بہار کےلیے تاریخی اہمیت کا حامل ہے آج ہی کے دن 100سال قبل اس عمارت میں جمہوریت کی پہلی بیٹھک ہوئی تھی یہ عمارت کئی تاریخی واقعات کی گواہ ہے۔انہوں نے کہا کہ لو ک سبھاا سپیکراوم برلا نے اس موقع پر ایک خط بھیجا ہے اور مبارک باد پیش کی ہے۔قابل ذکر ہے کہ 100سال قبل 7فروری 1921کو بہار اسمبلی کا پہلا اجلاس ہوا تھا۔ اس وقت بہار اڈیسہ ودھان پریشدکہلاتا تھا۔پہلی بیٹھک کو گورنر لارڈ پرسنیہ سنہانے خطاب کیا تھا اور ایوان کے اسپیکر سے والٹر ماڈ ایوان کے منتخب اراکین کو منتخب کرنے والے مختصر لوگ تھے یہ تعداد صرف 2404تھی۔