بہار میں صنعتی انقلاب اولین ترجیح،اردومیری مادری زبان:شاہنوازحسین

پٹنہ:نتیش کابینہ کے تمام نئے وزراء نے اپنی وزارت کی ذمہ داری سنبھال لی ہے۔ بی جے پی کے قد آور لیڈر اور نئے ریاستی وزیرصنعت سید شاہنواز حسین نے بھی آج وزارت کی ذمہ داری سنبھالی۔ اس موقع پر انہوں نے محکمہ صنعت کے سینئرافسران کے ساتھ ایک گھنٹے تک میٹنگ کی اور صنعت کے فروغ کے لیے ٹھوس لائحہ عمل تیار کرنے کی ہدایت دی۔ اس موقع پر کثیر تعداد میں بہار کے گوشے گوشے سے لوگ انہیں مبارک باد دینے دفتر پہنچے تھے۔ریاستی وزیر صنعت سید شاہنواز حسین نے وزارت کی ذمہ داری سنبھالتے ہی کہاہے کہ اردو محبت اخوت اور گنگا جمنی تہذیب کے ساتھ ساتھ بہار کی دوسری سرکاری زبان بھی ہے۔ یہ میری مادی زبان ہے اس زبان میں ہی میں نے حلف لیا۔ اس زبان کی ترویج و ترقی کیلئے میں ہر ممکن کوشش کروںگا۔ شاہنوازحسین نے یہ نہیں بتایاکہ اردوکی لازمیت ختم کرنے والے سرکلرپروہ کیاکریں گے جس کے تحت بہارمیں اردو کو زبردست نقصان پہونچانے کی کوشش کی گئی ہے۔اس پرسابق وزیرتعلیم سے اردوکے فکرمندحضرات کی ملاقات بھی ہوئی لیکن سرکارکے سرپرجوں تک نہ رینگی۔شاہنوازحسین نے یہ ضرور کہاہے کہ اصل میں اردو آبادی کی بے حسی بے خبری اور بے اعتنائی کے سبب یہ زبان ختم ہونے کے دہانے پر پہنچ گئی ہے۔کوئی زبان صرف حکومت کے بھروسے زندہ نہیں رہ سکتی۔ محبان اردو کو نئی نسل تک اس زبان کو منتقل کرنے کی ذمہ داری ہے۔بہار میں نئے صنعت کے فروغ کیلئے کام شروع کیا جائے گا۔یہاں صنعت کو دیگر ریاستوں اور بیرون ملک سے بھی لانا ہے۔صنعتی سرمایہ بنانا اور یہاں کے نوجوانوں کو روزگار مہیاکرانا ہماری ترجیحات ہیں۔انہوں نے کہا کہ بہار میں انفراسٹرکچر تیار ہے اور اب صنعت کے بڑے امکانات ہیں۔ انہوں نے کہا کہ بہارمیں سمند ر نہیں ہے اس سے کوئی فرق نہیں پڑتا ،بہار میں گنگا بہتی ہے ،گنگا میں جہاز کے ذریعہ سے بھی صنعت کو فروغ دیا جاسکتا ہے۔جن ریاستوں میں سمندر نہیں ہے وہاں بھی صنعتی ترقی ہورہی ہے اسی طرح بہار کو بھی صنعت کے اعتبار سے ترقی یافتہ صوبہ بنانا ہے اس سلسلے میں ہم نے افسران کو ٹاسک دے بھی دیا ہے۔سید شاہنواز حسین نے ملک کے وزیراعظم نریندر مودی اور وزیر داخلہ امت شاہ کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ انہوں نے مجھ پر بھروسہ کیا ہے میں ان کے خوابوں کو شرمندہ تعبیر کروں گا۔بہار میں اتنی صلاحیت ہے کہ اسے صنعتی مرکز بنایا جاسکے۔جب ان سے سوال کیا کہ نتیش کمار نے تو کہا تھا کہ سمندر نہیں ہونے کی وجہ سے بہار میں صنعت نہیں رکھ سکتے تو شاہنواز نے کہا کہ وزیراعلیٰ نے یہ بات کچھ الگ وجوہات سے کہی ہیں یہ صحیح ہے کہ سمندر کنارے والے ریاستوں میں ٹرانسپورٹیشن کی آسانی ہوتی ہے۔بہار میں گنگابہتی ہے گنگا ندی میں جہاز چلنے شروع ہوگئے ہیں ہم گنگا ندی کو سمند کی طرح استعمال کریں گے۔انہوں نے کہا ہے کہ وہ بی جے پی کے ادنی خادم ہے وہ ملک کے وزیراعظم کے خوابوں کو شرمندہ تعبیرکریں گے اور بہار میں صنعتی انقلاب لائیں گے۔