بہار میں پہلے مرحلےکی ووٹنگ:الیکشن کمیشن کی سبکی،متعددپولنگ بوتھ پرای وی ایم میں شکایات

خواتین کاالزام،بی جے پی ووٹ کے لیے مجبورکرنے لگی،متعددگاؤں نے ووٹنگ کابائیکاٹ کیا
پٹنہ:الیکشن کمیشن کی اس وقت بڑی سبکی ہوئی جب بہارالیکشن کے پہلے مرحلے کے متعددپولنگ بوتھوں پرای وی ایم میں گڑبڑی کی اطلاعات آئیں،کئی جگہ سنگین الزامات لگائے گئے۔متعددحلقوں میں لوگوں نے ترقی نہ ہونے اوروعدہ خلافی پرووٹ کابائیکاٹ کیاہے۔جس سے نتیش سرکارکے ترقی کے دعووں کی پول کھل گئی ہے ۔بعض جگہ بی جے پی نمائندے زبردستی لوگوں سے ووٹ دلوارہے تھے۔گیا شہری اسمبلی حلقہ سوراجپوری روڈ کے مقام پر خواتین نے بی جے پی لیڈروں کی شکایت کی۔ خواتین نے الزام لگایا کہ کچھ لوگ ان پر دباؤ ڈال رہے ہیں کہ وہ بھارتیہ جنتا پارٹی کو ووٹ دیں۔ اس کے بعد وہ وہاں موجود پولنگ عملہ کے ساتھ الجھ گئے۔ اس سے کچھ وقت کے لیے بوتھ پر خوف و ہراس پھیل گیا۔ بی جے پی کے لیڈر اور ریاستی وزیرزراعت ڈاکٹر پریم کمار گیا شہری اسمبلی حلقہ سے امیدوار ہیں۔ دوسری طرف ، لوگوں نے پٹنہ ضلع کے پیلی گنج اسمبلی حلقہ اور نوادہ سمیت متعدد اسمبلی حلقوں میں ووٹنگ کا بائیکاٹ کیا۔مقامی خواتین نے بتایاہے کہ بی جے پی کی خواتین رضاکارعلاقے میں داخل ہوئیں اور بی جے پی پر ووٹ ڈالنے کے لیے دباؤڈالنا شروع کیا۔ مقامی خاتون شیباپروین نے کہاہے کہ ہمارا حق رائے دہی ہماراہے۔ ایسی صورتحال میں بی جے پی کے لوگ علاقے میں آ رہے ہیں اورلوگوں کو بی جے پی کو ووٹ دینے پر مجبور کررہے ہیں۔ یہ کہیں سے درست نہیں ہے۔ انہوں نے پولیس اہلکاروں سے معاملے کی تحقیقات کا مطالبہ کیا۔ تھانہ سول لائنز کے ایس آئی سی ایم موقع پر پہنچ گئے مشرا نے ناراض خواتین کو پرسکون کیا۔انہوں نے کہاہے کہ کسی بھی حالت میں بوتھ پر کوئی خلل نہیں ہوگا۔ شکایات موصول ہو رہی ہیں اور تحقیقات کے بعدکارروائی کی جائے گی۔بکسر ضلع میں برہم پور حلقہ کے سیہار گاؤں میں دیہاتیوں نے ووٹنگ کا بائیکاٹ کیا۔بھوج پور کے تراری اسمبلی حلقہ کوساری میں 2300 افراد نے ووٹ کا بائیکاٹ کیا۔ وہ سڑکوں ، پلوں کے اچھے انتظامات کامطالبہ کر رہے تھے۔ دیہاتیوں نے بتایا کہ گاؤں میں پچھلے پانچ سالوں میں کوئی ترقیاتی کام نہیں ہوا ہے۔236 نمبر بوتھ پر پولنگ کا آغاز کافی دیرتک نہیں ہوا۔انتظامیہ ووٹرز کو راضی کرنے میں مصروف ہے۔ لوگ ناراض تھے کیوں کہ یہاں سڑک نہیں بنائی گئی تھی۔ضلع بھوج پور کے شاہ پور اسمبلی حلقہ کے گووند پور پرائمری اسکول میں پولنگ اسٹیشن نمبر 48 پر دیہاتیوں نے ووٹنگ کابائیکاٹ کیا۔ دیہاتیوں نے واضح طور پر اعلان کیا ہے کہ اگر سڑک نہیں ہے تو ووٹ نہیں دیں گے۔ دیہاتیوں نے کہاہے کہ ہمیں ہمیشہ صرف یقین دہانی کرائی گئی ہے۔ لیکن ابھی تک کوئی سڑک بنانے کے لیے آگے نہیں آیا۔ عوامی نمائندے کو یہ تک احساس نہیں ہوتا ہے کہ سڑک نہ ہونے سے لوگوں کو کتنی مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔گاؤں کے لوگوں نے اسکول ، بوتھ نمبر-255 اور 256 پر ووٹنگ کا بائیکاٹ کیا۔ ایک بھی ووٹر نے دوگھنٹے تک ووٹ نہیں دیا تھا۔ نوادہ کے ہی راجن میں ہی امڈل اسکول کے بوتھ 136 اور 137 میں دیہاتیوں نے ووٹنگ کا بائیکاٹ کیا۔ کسی بھی ووٹرنے ساڑھے تین گھنٹے تک ووٹ نہیں دیا تھا۔ یہاں کے رائے دہندگان اس یقین دہانی پر ناراض ہیں کہ سڑک نہیں بنائی گئی ہے ۔