بہار میں دلتوں پر سیاست تیز،تیجسوی و مانجھی آمنے سامنے

پٹنہ:اسمبلی انتخابات سے قبل بہارمیں دلتوں پر سیاسی بیان بازی شدت اختیار کر گئی ہے۔وزیراعلیٰ نتیش کمار نے دلت کے ہلاک ہونے پرمتاثرہ خاندان کے ایک ممبر کو سرکاری ملازمت دینے کی فراہمی پر عمل درآمدکی ہدایت کی۔ اس پر ہفتہ کے روزتیجسوی یادونے کہاہے کہ نتیش کمار دلتوں کے قتل کو فروغ دے رہے ہیں۔ اس بیان کے بعد ’ہم ‘پارٹی کے لیڈرجیتن رام مانجھی نے تیجسوی یادوکوقانون پڑھنے کامشورہ دیاہے۔تیجسو ی یادونے کہاہے کہ وزیراعلیٰ کو ایساقانون بنانا چاہیے ،جس سے دلتوں کا تحفظ ہو،آپ کیا قانون بنا رہے ہیں؟ آپ دلتوں کے قتل کو فروغ دے رہے ہیں۔ یہ قانون مزید دلتوں کومارے گا۔ پہلے ہی بہار میں جرائم عروج پرہیں۔ بہار میں ہر چار گھنٹے بعد زیادتی ہوتی ہے اور نتیش کمار کہتے ہیں کہ بیٹیاں محفوظ ہیں۔’ہم‘ پارٹی کے لیڈراور سابق وزیراعلیٰ جتن رام مانجھی نے کہا کہ جو لوگ دلت کے قتل پرسرکاری ملازمتوں کی فراہمی پرسوال اٹھارہے ہیں وہ پہلے قانون پڑھیں۔ ایس سی / ایس ٹی ایکٹ 1989 میں نافذکیاگیاتھااور1995 میں لاگوہواتھا۔ اس میں بہت ساری ترامیم کی گئی ہیں ، لیکن اصل دفعہ 325 میں دلت کو قتل کرنے کی سزا دینے کا انتظام ہے۔ اس سے متاثرشخص کوپنشن کے علاوہ روزگار بھی فراہم کرناہوگا۔