بہار انتخابات کے نتائج سےسبق حاصل کریں سیکولر پارٹیاں:پاپولرفرنٹ آف انڈیا

نئی دہلی:پاپولر فرنٹ آف انڈیا کے چیئرمین او ایم اے سلام نے اپنے ایک بیان میں ۲۰۲۰ کے بہار اسمبلی انتخابات کے نتائج کو ملک کی سرکردہ سیکولر پارٹیوں کے لیے بیدار ہونے کی دعوت قرار دیا ہے۔بہار انتخابات کے نتائج نے ایک بار پھر یہ ثابت کیا ہے کہ کس طرح سے کانگریس جیسی بڑی سیکولر پارٹیاں ایک مختلف نتیجے کی امید میں لگاتار وہی غلطیاں دہرا رہی ہیں۔ پارٹی نے یہ ثابت کر دیا ہے کہ وہ بی جے پی کی مسلم وعوام مخالف فسطائی سیاست کا متبادل نہیں ہو سکتی۔ ان کی انتخابی مہم میں مسلمانوں کے سنجیدہ مسائل، سی اے اے، این آر سی اورمسلم سیاسی نمائندگی وغیرہ جیسے مدعوں پر بات بھی نہیں کی گئی۔ کانگریس جیسی قومی سطح کی پارٹیاں سنگھ پریوار کی سیاسی منافرت پرمبنی مہمات کے خلاف ایک مضبوط سیکولر ماحول تیار کرنے میں عوام کا دل ودماغ نہ جیت سکیں۔ بلکہ اس کے بجائے وہ بی جے پی کے ہندو ووٹ بینک کو رجھانے کی غرض سے نرم ہندوتوا سیاست کرتی ہوئی نظر آئیں۔ ان پارٹیوں کو اب واقعی طور سے اپنا جائزہ لینے کی سخت ضرورت ہے۔ ایسا کرنے کے بجائے، نتائج آنے پر یہ اپنی ناکامیوں کا الزام اقلیتی پارٹیوں پر رکھنے میں بڑی جلدبازی دکھاتی ہیں۔یہ بڑی امیدافزا بات ہے کہ مسلم انتخابی ردّعمل نے ایک اہم بنیادی تبدیلی کا مظاہرہ کیا ہے۔ ایم آئی ایم کو ملی پانچ سیٹیں ان پارٹیوں کو کھلا پیغام دے رہی ہیں جنہوں نے مسلمانوں کے ووٹ بینک کو اپنی جاگیر سمجھنے کی روایت بنا رکھی ہے۔ مسلمانوں کے ووٹ کو اب یونہی نہیں لیا جا سکتا اب اسے انہیں کچھ دے کر ہی حاصل کرنا پڑے گا۔ مسلم سماج اب یہ کہہ رہا ہے کہ انہیں کوئی معنیٰ خیز نمائندگی یا مسلم پارٹیوں کو کوئی مقام دیئے بغیر ان کا ووٹ حاصل کرنا مزید برداشت نہیں کیا جائے گا۔پاپولر فرنٹ یہ واضح کرنا چاہتی ہے کہ یہ نتائج سیکولر پارٹیوں کے لیے بیدار ہونے کی دعوت ہیں۔ اگر سیکولر پارٹیاں اس سے سبق لیتی ہیں تو یقینی طور سے مستقبل میں ایک سیکولر بھارت کاخواب دیکھا جا سکتا ہے۔