بھارت بند:بڑے دنوں بعد اناہزارے بیدار ہوے،کسانوں کی حمایت میں ایک دن کے انشن پر بیٹھے

پونے:کسان مودی حکومت کے تینوں زرعی قوانین کے خلاف سراپا احتجاج ہیں۔ سماجی کارکن انا ہزارے کسانوں کی حمایت میں منگل کوایک دن کے انشن پر بیٹھے ۔ احتجاج کرنے والے کسانوں کی تنظیموں نے بھی بھارت بند کی اپیل کی تھی۔ ہزارے نے کہا کہ ملک میں احتجاج ہونا چاہئے تاکہ حکومت پر دباؤ ہو اور وہ کسانوں کے مفاد میں اقدامات کرے۔ ہزارے نے ایک ریکارڈ شدہ پیغام میں کہاکہ میں ملک کے عوام سے اپیل کرتا ہوں کہ دہلی میں جو تحریک چل رہی ہے اسے پورے ملک میں چلنا چاہیے۔ حکومت پر دباؤ ڈالنے کے لیے ایسی صورتحال پیدا کرنے کی ضرورت ہے اور اس کے لیے کسانوں کو سڑکوں پر نکلنا ہوگا۔ لیکن کوئی تشدد نہ کریں۔ مہاراشٹر کے احمد نگر ضلع کے رالے گن سدھی گاؤں میں ہزارے بھوک ہڑتال پر بیٹھے ۔ انہوں نے کہا کہ کاشتکاروں کے لیے یہ صحیح وقت ہے کہ وہ سڑکوں پر آئیں اور اپنا مسئلہ حل کروائیں۔ انا ہزارے نے کہاکہ میں نے پہلے بھی اس مسئلے کی حمایت کی ہے اور کرتا رہوں گا۔ ہزارے نے کمیشن برائے زرعی خرچ اور قیمتیں (سی اے سی پی) کو خود مختاری دینے اور ایم ایس سوامی ناتھن کمیشن کی سفارشات پر عمل درآمد کرنے پر بھی زور دیا۔انہوں نے کہاکہ حکومت صرف یقین دہانی کرتی ہے، مطالبات کو کبھی پورا نہیں کرتی ہے۔