بھاجپا کے ریاستی صدر سنجے جیسوال کا’ دلت پریم‘، اپنی ہی حکومت پر حملہ

پٹنہ :صوبائی پولیس کے طریقہ کارپرسوال اٹھانے والوں میں بی جے پی کے ریاستی صدر سنجے جیسوال بھی شامل ہوگئے ہیں۔انہوں نے اپنی ہی حکومت میں ریاست میں دلتوں پر مبینہ مظالم بڑھنے کا الزام عائد کیا ہے۔ سنجے جیسوال نے یہ معاملہ اپنے فیس بک وال کے ذریعہ اٹھایا ہے۔بی جے پی کے ممبر پارلیمنٹ سنجے جیسوال نے اپنے فیس بک پر حالیہ دنوں میں بہار میں پیش آنے والے کئی واقعات کا ذکر کیا ۔ انہوں نے لکھا ہے کہ رام گڑھوا کے گاؤں دھن گڑھوا کے بارے میں یہ اطلاع ملی ہے کہ دلت برادری کے لوگوں کا راستہ اینٹ کی دیوار بناکر کچھ اقلیتی برادری نے روک لیا ہے۔ میں نے پلنوا پولیس اسٹیشن کے انچارج سے بات کی اور اس کے ساتھ سرکل آفیسر خود بھی اس جگہ گئے اور اس مسئلے کو حل کیا ۔خیال رہے کہ رام گڑھوا سنجے جیسوال کے پارلیمانی حلقہ بتیا کا ایک حصہ ہے۔ اس پوسٹ میں بی جے پی رہنما نے ماضی میں ایسے واقعات کا تذکرہ کیا ہے، جس میں انہوں نے پسماندہ اور دلت طبقہ کے لوگوں پر مظالم کی بات کی ہے۔سنجے جیسوال مزید لکھتے ہیں کہ پچھلے کچھ دنوں میں اس طرح کے واقعات میں اضافہ ہوا ہے۔ بی جے پی کے ریاستی صدر نے اپنے فیس بک پوسٹ میں کشن گنج جیسے مسلم اکثریتی ضلع کی بھی بات کی ہے۔اپنے فیس بک پوسٹ میں سنجے جیسوال نے بتیا واقعے کے علاوہ دیگر تمام واقعات میں پولیس کے طریقہ کار پر سوالیہ نشان لگا یا ہے۔