بنگلور کے سب سے بڑے کووڈ 19 ہسپتال میں وینٹی لیٹر پر 97فیصد مریضوں کی موت

بنگلور کے سب سے بڑے کووڈ 19 ہسپتال میں وینٹی لیٹر پر 97فیصد مریضوں کی موت
نئی دہلی:ملک بھر میں مسلسل بڑھ رہے کورنا وائرس کی وجہ سے تشویش بڑھتی جارہی ہے۔ تھوڑی سی لاپرواہی کسی کو بھی اسپتال کے بیڈ پر لے جاسکتی ہے۔ اب ملک میں کورونا مریضوں کی تعداد 10 لاکھ کو عبور کر چکی ہے۔پچھلے 24 گھنٹوں کے دوران اس انفیکشن کے سب سے زیادہ 34956 نئے کیس رپورٹ ہوئے ہیں اور 687 افراد کی موت ہوئی ہے۔ ملک میں متاثرہ افراد کی مجموعی تعداد 1003832 ہوگئی ہے۔ ان میں 342473 فعال معاملات موجود ہیں جبکہ 635757 افراد ٹھیک ہوگئے ہیں۔ اب تک 25602 افراد اپنی زندگی سے ہاتھ دھو بیٹھے ہیں۔وہیں ملک کا اگلاہاٹ اسپاٹ بن رہے بنگلور سے بھی بڑی حیران کن خبریں سامنے آرہی ہیں۔ دوسرے شہروں کے مقابلے میں بنگلور کی مجموعی اموات کی شرح سب سے زیادہ ہے۔ بنگلورو میں اب تک مجموعی طور پر 25288 کووڈ 19 واقعات کی اطلاع ملی ہے، جس میں 507 افراد اپنی زندگی سے ہاتھ دھو بیٹھے ہیں۔ بنگلور کی ہلاکتوں کی تعداد اب تک 4.8فیصد ہے جو دہلی، کولکاتہ اور چنئی سے بھی زیادہ ہے۔رپورٹ کے مطابق، وینٹی لیٹر پر رکھے گئے 97فیصد مریض بنگلور کے سب سے بڑے کورونا اسپتال میں فوت ہوگئے۔ یہ تعداد دنیا میں سب سے زیادہ شرح اموات والے ممالک سے بھی زیادہ ہے ۔اعداد و شمار کے مطابق، اپریل میں 100 سالہ قدیم وکٹوریہ اسپتال بنگلور میڈیکل کالج اینڈریسرچ انسٹی ٹیوٹ سے جوڑکرشہر کا پہلا کورونا اسپتال بنا گیا تھا۔ اپریل سے لے کراب تک اسپتال میں کورونا کی وجہ سے مجموعی طور پر 91 مریضوں کی موت ہوگئی، جن میں سے 89 کو وینٹی لیٹر پر رکھا گیا تھا۔مجموعی طور پر 1500 کورونا مریضوں کو اسپتال میں داخل کرایا گیا تھا، ان میں سے 91 افراد کو سانس کی زیادہ تکلیف کے باعث وینٹی لیٹر پر رکھا گیا تھا۔ ان میں سے 89 کی موت ہوگئی۔ بتادیں کہ بنگلورو کے تمام کورونا ہسپتالوں میں سے وکٹوریہ اسپتال میں سب سے زیادہ 50 وینٹی لیٹر دستیاب ہیں۔وکٹوریہ اسپتال کے یہ اعداد و شمار تشویشناک ہیں۔ وینٹی لیٹروں پر 97فیصد مریضوں کی موت کے اعداد و شمار سے پتہ چلتا ہے کہ انتہائی نگہداشت میں سب کچھ ٹھیک نہیں چل رہا ہے۔ یہاں تک کہ اٹلی میں بیماری کے نازک وقت کے دوران وینٹی لیٹروں پر کورونا مریضوں کی اموات کی شرح صرف 65فیصدتھی۔