بنگال کشمیرہوجائے توحرج کیاہے؟عمرعبداللہ کابی جے پی پرپلٹ وار

کولکاتہ:مغربی بنگال میں انتخابی شورشروع ہوگیاہے۔متنازعہ بیانات کاسلسلہ جاری ہے ۔بی جے پی فرقہ وارانہ خطوط پرالیکشن لڑنے کے موڈمیں ہے۔گئوکشی،لوجہاد،اقلیتوں کی خوشامد،پاکستان،اسلا می ملک،دراندازی جیسے جملے سننے میں آرہے ہیں۔نندی گرام سے بی جے پی کے امیدوار شبھیندو ادھیکاری نے ٹی ایم سی پر شدید حملہ کیا۔اس دوران انہوں نے یہاں تک کہاہے کہ اگر ٹی ایم سی دوبارہ اقتدار میں آجائے گی تومغربی بنگال کشمیر بن جائے گا۔ اس بیان کے بعد سیاسی لڑائی شروع ہوگئی ہے۔ جموں وکشمیرکے سابق وزیراعلیٰ عمر عبد اللہ نے اس بیان پر سخت رد عمل کااظہارکیاہے۔ عمر عبداللہ نے کہا ہے کہ بی جے پی کے لوگوں کے مطابق اگست 2019 کے بعد کشمیر جنت بن گیا ہے تومغربی بنگال کے کشمیر بننے میں کیاحرج ہے؟ بہرحال بنگالی لوگ کشمیر سے پیار کرتے ہیں اور بڑی تعداد میں ہم سے ملتے ہیں۔ یہ ایک احمقانہ تبصرہ ہے۔ اس کے لیے ہم معاف کرتے ہیں۔