بنگال کے لیے بی جے پی کاانتخابی منشورجاری

نئی دہلی:مرکزی وزیر داخلہ امت شاہ کی موجودگی میں بی جے پی نے مغربی بنگال میں اسمبلی انتخابات کے لیے اپنا منشور جاری کیاہے۔اس کے تحت ریاستی سرکاری ملازمتوں میں خواتین کو 33 فیصد ریزرویشن کا وعدہ کیا گیا ہے۔بی جے پی نے کہاہے کہ کابینہ کے پہلے اجلاس میں سی اے اے کو نافذ کیا جائے گا۔گائے کی اسمگلنگ روکی جائے گی ۔امیت شاہ نے کہاہے کہ ہماری حکومت ریاست میں دراندازی کومکمل طور پر روک دے گی۔ کے جی سے پی جی تک لڑکیوں کو مفت تعلیم دی جائے گی۔فوڈ پلیٹ 5 روپے میں شروع کی جائے گی۔اعلامیہ میں یہ سب امورشامل کیے گئے ہیں۔تمام ریاستی سرکاری ملازمتوں میں خواتین کے لیے 33فی صدریزرویشن،ماہی گیروں کو ہر سال 6 ہزار روپے دیئے جائیں گے،سرکاری نقل و حمل میں خواتین سے کوئی معاوضہ نہیں لیا جائے گا،کھانے کی پلیٹ 5 روپے سے شروع ہوگی،اینٹی کرپشن ہیلپ لائن شروع ہوگی،کے جی سے پی جی تک لڑکیوں کے لیے مفت تعلیم،تمام سرکاری ملازمین کے لیے ساتواں پے کمیشن،ہر خاندان میں ایک ممبر کی نوکری،آیوشمان بھارت اس اسکیم کو نافذ کرے گی،سی اے اے پرکابینہ کے پہلے اجلاس میں عمل درآمد کرے گی،بدعنوانی کی اطلاع براہ راست وزیراعلیٰ کو دی جا سکے گی،گائے کی اسمگلنگ کو روکنے کے لیے موزوں طریقہ کار وضع کیا جائے گا،بنگال میں تین نئے ایمس تعمیر کیے جائیں گے،میڈیکل کالج کی نشستوں کو دوگنا کردیں گے ،کاشتکار تحفظ اسکیم کے تحت ہر بے زمین کسانوں کو سالانہ 4000 روپے کی امداد،بی جے پی حکومت مہیسیا ، ٹیلی اور دیگر ہندو برادریوں کو شامل کرنے کاکام کرے گی جو او بی سی ریزرویشن کی فہرست میں رہ گئے ہیں۔پرولیا میں گھریلو ہوائی اڈے کی تعمیر،نوبل پرائز کی خطوط پر رابندر ناتھ ٹیگور کو دینے کا وعدہ،بنگال میں دودھ کے پانچ نئے پلانٹ،مغربی بنگال کو سیٹی بنانے والا قانون بنانے کا وعدہ،میڈیکل اور انجینئرنگ کی تعلیم بنگالی زبان میں ہوگی،بنگال میں ونڈو کا ایک ہی نظام شروع ہوگا۔