بٹلہ ہاؤس انکاؤنٹر کیس:عارض خان کو سزائے موت سنائی گئی

نئی دہلی:بٹلہ ہاؤس انکاؤنٹر کیس میں ساکیت عدالت نے ملزم عارض خان کو پھانسی کی سزا سنائی ہے۔ اس سے قبل 2013 میں شہزاداحمد کو عمر قید کی سزا سنائی گئی تھی۔ دونوں پرالزام ہے کہ بٹلہ ہاؤس انکاؤنٹر کے درمیان فرار ہوگئے تھے۔ اس کے دو ساتھی عاطف آمین اور محمد ساجد ہلاک ہوگئے ، جبکہ ایک ملزم کو موقع سے گرفتار کرلیا گیا۔اس انکائونٹرکے بعدخودکانگریس کے سنیئرلیڈروں نے سوال اٹھائے ہیں۔اوراس وقت کانگریس مرکزاورریاست میں اقتدارمیں تھی۔ اہم بات یہ ہے کہ اس مبینہ انکاؤنٹر میں دہلی پولیس انسپکٹر موہن چند شرما شہید جبکہ دو پولیس اہلکار زخمی ہوگئے تھے۔الزام ہے کہ سال 2008 میں دہلی ، جے پور ، احمد آباد اور یوپی کی عدالتوں میں ہونے والے دھماکوں کی اصل سازش عارض خان نے کی تھی۔ ان دھماکوں میں 165 افراد ہلاک اور 535 افراد زخمی ہوئے تھے۔یوپی کے اعظم گڑھ کے رہائشی عارض خان عرف جنید کو فروری 2018 میں اسپیشل سیل کی ٹیم نے گرفتار کیا تھا۔ عدالت نے کہاہے کہ 11 لاکھ روپے معاوضہ بھی ادا کرنا پڑے گا جس میں سے 10 لاکھ روپے موہن چندشرما کے اہل خانہ کو دینا ہوں گے۔