باہرکے لوگ بنگال کاماحول خراب کررہے ہیں،ممتابنرجی کابی جے پی پرحملہ جاری

کولکاتہ:جمعرات کو ممتا بنرجی نے پریس کانفرنس کے دوران بی جے پی اور مرکزی حکومت کو شدید تنقید کا نشانہ بنایا۔ پی سی کے دوران ممتا بنرجی نے ایک طرف سبھاش چندر بوس کے پرانے مسئلے کواٹھایا اور کورونا ویکسین پر مرکزی حکومت کوگھیرا ۔اس کے ساتھ ہی ، مغربی بنگال کی وزیراعلیٰ ممتابنرجی نے مرکزی وزیرداخلہ امیت شاہ پر بھی تبصرے کیے۔ اوربتایاہے کہ مرکزی حکومت کسانوں کے حقوق کیوں چھیننا چاہتی ہے؟بی جے پی پر حملہ کرتے ہوئے ممتابنرجی نے کہا کہ بی جے پی صرف ایک آدمی ، ایک سیاست ، ایک رہنما اور کچھ نہیں چاہتی ہے۔ ملک ہم سب کا ہے۔ وہ آزادی کی جدوجہد میں کہاں بھٹک رہے تھے۔ اس وقت انہوں نے ملک کے ساتھ غداری کی۔میں کسانوں کے ساتھ مکمل طور پرکھڑی ہوں۔ اگر وہ مجھے کال کریں تو میں ان کے حق میں جانے کو تیار ہوں۔پریس کانفرنس کے دوران ممتا بنرجی نے کہا کہ بنگال میں بیرونی لوگوں کے لیے کوئی جگہ نہیں ہے۔ جو لوگ فرقہ وارانہ مسئلہ پیداکرنے کے لیے انتخابات سے عین قبل بنگال آتے ہیں وہ باہرکے لوگوں کے سوا کچھ نہیں ہیں۔انتخابات سے عین قبل ممتابنرجی نے ایک بار پھر نیتا جی سبھاش چندر بوس کا معاملہ اٹھایا۔ بنگال حکومت نے نیتا جی کی 125 ویں برسی کے موقع پرایک سالہ طویل پروگرام کا اعلان کیا۔ بنگال حکومت نے سال بھر کی تقریبات کے منصوبے کے لیے ایک اعلیٰ سطحی کمیٹی تشکیل دی ہے۔ ممتابنرجی نے نوبل انعام یافتہ امرتیہ سین اور ابھیجیت بینرجی کو کمیٹی کا حصہ بنایا ہے۔ بنگال کے دانشوربھی کمیٹی کا حصہ ہوں گے۔