بڑھتی مہنگائی اور ماب لنچنگ پر لالویادو کا تلخ ٹوئٹ ،’ ملک میں صرف انسانی جان سستی ہے‘

پٹنہ: ملک میں بڑھتی مہنگائی کی وجہ سے ایک بار پھر سیاسی پارہ بڑھنا شروع ہو گیا ہے۔ ایک طرف جہاں آر جے ڈی سپریمو لالو پرساد یادو اور سابق وزیراعلیٰ رابڑی دیوی نے مرکز میں بی جے پی کی مودی حکومت اور ریاست کی نتیش حکومت کو ٹوئٹ کے ذریعے نشانہ بنایا ،تو وہیں دوسری طرف تیجسوی یادو کو اس مسئلے کے تناظر میں مسلسل حملہ آور نظرآرہے ہیں ۔جب کہ بی جے پی بڑھتی مہنگائی کو اپوزیشن کا پروپیگنڈا بتا رہی ہے ۔خیال رہے کہ مہنگائی کے معاملہ پر لالو رابڑی نے سوشل میڈیا کے ذریعہ مل کر حملہ کیا۔لالو یادو نے اپنے ٹویٹ میں لکھاکہ:’ آٹا ، سبزیاں ، پھل ، دال ، تیل ، مصالحے ، پٹرول ، ڈیزل ، گیس ، ادویات ، نقل وحمل کے کرایے سب مہنگے ہو گئے ، ڈبل انجن والی حکومت نے ملک میںاشیائے خوردنی کی خرید سے لے کر کھانا پکانے تک کی ہر چیز مہنگی کر دی ہے، اب ملک میں صرف انسانی جان سستی ہے ، جو کبھی بھوک کی وجہ سے ،کبھی مالی تنگی کی وجہ سے ،تو کبھی لنچنگ کے باعث چلی جاتی ہے۔جبکہ رابڑی دیوی نے بھی سخت انداز میں تبصرہ کیا ہے،اپنے ٹویٹ میں بھوجپوری انداز میں لکھا کہ:’تیری سدا ہی ہار ہو مہارانی مہنگائی ، اچھے دن چھوڑ،پرانے دن دو لوٹائی ‘۔ اس پر بی جے پی کوٹہ کے وزیر امریندر پرتاپ کا کہنا ہے کہ مہنگائی میں اضافہ کی کئی وجوہات ہیں۔ اس وقت ملک میں کرونا کی وجہ سے مہنگائی نظر آرہی ہے ، جب کہ دوسری جانب وزیر صنعت شاہنواز حسین نے کہا کہ اپوزیشن کا کام حکومت کیخلاف بیان دینا ہے، یہی وجہ ہے کہ یہ لوگ ایسی بیان بازی کر رہے ہیں۔ امریندر پرتاپ سنگھ اور شاہنواز حسین کے اس بیان پر تنقید کرتے ہوئے آر جے ڈی ایم ایل اے ڈاکٹر مکیش روشن کا کہنا ہے کہ سات سال پہلے تک مہنگائی ڈائن ہوا کرتی تھی، لیکن اب یہی مہنگائی’’ بھابھی ‘‘بن گئی ہے۔دراصل ان لوگوں کے پاس مہنگائی کے بارے میں صرف بولنا جانتے ہیں ، ان کے پاس کوئی دائمی حل موجود نہیں ہے ۔