اجودھیا مسجد:تعاون کے لیے رہنما خطوط جاری،شراب تاجروں سے چندہ قبول نہیں کیا جائے گا

اجودھیا:یوپی سنی وقف بورڈ سپریم کورٹ کے حکم پر حکومت کے دیئے ہوئے متبادل مقام پر مسجد تعمیر کرے گا۔ دریں اثنا ہند اسلامی ثقافتی فاؤنڈیشن ٹرسٹ نے اقتصادی تعاون کے لیے رہنما اصول طے کیا ہے۔ گائیڈ لائن کے مطابق اجودھیاکے گاؤں دھنی پورمیں مسجد کی تعمیرجائز رقم سے کی جائے گی۔ شراب کے کاروبار سے وابستہ لوگوں کی طرف سے کوئی عطیہ نہیں لیاجائے گا۔ہند اسلامی ثقافتی فاؤنڈیشن ٹرسٹ کے مطابق اس سلسلے میں جلد ہی ایک ویب سائٹ اور پورٹل تیار ہوجائے گا۔ اس کے بعد یہ فیصلہ کیا جائے گا کہ مسجد اور اسپتال میں کس اکاؤنٹ کے ذریعے تعاون کرناہے۔مسجد ڈیزائن کرنے کی ذمہ داری جامعہ ملیہ اسلامیہ کے ڈین آرکیٹیکچر پروفیسر ایس ایم اخترکودی گئی ہے۔ پروفیسر ایس ایم اختر نے بتایاہے کہ ایودھیا میں سنی وقف بورڈنے انہیں یہ ذمے داری سونپی ہے۔ اجودھیامیں صرف مسجد نہیں بلکہ اس زمین پر ایک عمارت کی تعمیرکی جارہی ہے،مسجد اس کا ایک حصہ ہوگی۔ اس کمپلیکس کو تین اقدار کی بنیاد پر تعمیر کیا جائے گا۔انڈو اسلامک کلچرل فاؤنڈیشن اتر پردیش سنی وقف بورڈ کے ذریعہ قائم ایک ٹرسٹ ہے جو ایودھیا میں مسجدپروجیکٹ پر کام کررہی ہے۔