اجودھیا:مسجدکی تعمیرجلدشروع ہوگی،15 دسمبر کو ڈیزائن جاری ہوگا

اجودھیا:اترپردیش کے اجودھیامیں دھنی پور مسجد اور اس کے احاطے کا ڈیزائن تیارہے۔ مشہور معمار پروفیسر ایس ایم اختر کوویڈ سے متاثر ہونے کی وجہ سے آنہیں سکے ہیں۔ اب مسجد ٹرسٹ اپنے آرکیٹیکٹ ڈیزائن کو 15 دسمبر کو جاری کرے گا۔ آئی سی سی کے سکریٹری اطہرحسین نے مسجد ٹرسٹ کے بارے میں معلومات دیتے ہوئے کہاہے کہ مسجد کے گنبد نہیں ہوں گے ، اس سے بابری مسجد جیسی کوئی شناخت نہیں ہوگی۔ انہوں نے بتایاہے کہ پروفیسر اختر اسے آن لائن جاری کریں گے۔اطہر حسین نے بتایاہے کہ دھنی پور گاؤں کو مسجدکے لیے مختص اراضی ابھی بھی خالی ہیں۔اس کا زمینی نقشہ بھی تیار ہے۔ لیکن کام شروع نہیں ہواہے۔ گاؤں کے سربراہ راکیش یادو کہتے ہیں کہ ہمارا گاؤں ہندو مسلم بھائی چارہ کی مثال ہے۔ یہاں دونوں جماعتوں کے مابین کبھی بھی کوئی تنازعہ نہیں ہواہے۔ چاہے یہ 6 دسمبر 1992 کاواقعہ ہو یا پھرمندر کے حق میں سپریم کورٹ کافیصلہ۔اب لوگ خوش ہیں کہ یہ مسجد ایک بڑا مذہبی سیاحتی مرکز بننے جا رہی ہے۔ اس سے علاقے کی ترقی ہوگی۔ زمین کی قیمتوں میں اضافہ ہوگا۔ لوگوں کو روزگارملے گا۔ یادو کا کہنا ہے کہ مسجد ٹرسٹ انڈو اسلامک کلچرل فاؤنڈیشن کے لوگوں نے ہمیں بتایا ہے کہ یہ مسجد صرف 15000 مربع میٹر کے رقبے میں تعمیر کی جائے گی،باقی پانچ ایکڑ اراضی ہائی لیول اسپتال، لائبریری ، کلچرل ریسرچ سینٹر لائبریری وغیرہ میں تعمیر کی جائے گی۔ جو تمام برادریوں کے لیے فائدہ مند ثابت ہوگی۔ ہم بے صبری سے اس کی تعمیر کا انتظار کر رہے ہیں۔