ایودھیاکے سوامی پرمہنس داس کی زہرافشانی،’مسلمانوں کی شہریت ختم کرکے غلام بناکررکھاجائے‘

 

ایودھیا:مسلمانوں کے خلاف طالبان کے بہانے زہرافشانی جاری ہے۔ایودھیا کے سوامی پرمہنس داس ، جو متنازعہ بیانات سے بحث میں رہاکرتے ہیں ، ایک بار پھر بحث میں ہیں۔ پرمہنس داس نے اس بار یوپی کے دارالحکومت لکھنؤ سے متصل بارہبنکی کی سرزمین سے مسلمانوں کے بارے میں ایک متنازعہ بیان دیا اور اسد الدین اویسی کو بھی شدید نشانہ بنایا۔ سوامی پرمہنس داس نے ہندو راشٹر کے بارے میں بھی بات کی اور طالبان کی حمایت کرنے والوں پر بھی طنز کیا۔ پرمہنس داس نے ایودھیا میں آل انڈیا مجلس اتحاد المسلمین (اے آئی ایم آئی ایم) کے قومی صدر اسدالدین اویسی کی ریلی کے پوسٹر پر ایودھیا کو فیض آباد نہ لکھنے پر برہمی کا اظہار کیا۔ انہوں نے اویسی کو دوسرا جناح کہا اور کہا ہے کہ وہ ہمیشہ اشتعال انگیز تقاریر کرتے ہیں۔ حکومت نے فیض آباد کا نام ایودھیا رکھ دیا ہے ، یہ بھی قابل قبول ہے ، لیکن اویسی نے ایودھیانہیں لکھا اور پوسٹر پر فیض آباد لکھا ہے ، جس کی وجہ سے سنتوں اور ایودھیا کے شہریوں میں ناراضگی ہے۔پرمہنس داس نے کہاہے کہ اگر اویسی اپنے پوسٹروں میں فیض آباد کے بجائے ایودھیا نہیں لکھتے ہیں تو ہم ایودھیا میں ریلی کی اجازت نہیں دیں گے۔ ہم نے اس حوالے سے انتظامیہ کو آگاہ کر دیا ہے۔ پرمہنس داس نے شفیق الرحمن اور منور رانا پر طالبان کی حمایت میں بیانات کے لیے بھی حملہ کیا اور تمام مسلمانوں کو کٹہرے میں کھڑا کیا اور کہا کہ ان لوگوں نے دہشت گرد طالبان کی حمایت کی۔ اس سے ظاہر ہوتا ہے کہ مسلم کمیونٹی کو ایک الگ ملک دیاگیاہے ، پھر بھی وہ یہاں کیوں رہ رہے ہیں۔پرمہنس داس صرف یہیں نہیں رکے۔ مسلمانوں پر حملہ کرتے ہوئے انہوں نے الزام لگایاہے کہ وہ ملک میں رہ کر دہشت گردوں کی حمایت کریں گے اور دہشت گردی کا باعث بنیں گے۔انھوں نے یہ نہیں بتایاکہ پھرحکومت نے طالبان سے بات کیوں کی؟ انھو ںنے یہ بھی کہاہے کہ اسی لیے ہم نے یہ سوچنا شروع کر دیا ہے کہ مسلمانوں کی شہریت ختم ہونی چاہیے اور چاہے وہ ہندوستان میں ہی رہیں ، انہیں غلام کے طور پر رہنا چاہیے ورنہ پاکستان جانا چاہیے جو انہیں دیاگیاہے۔ ہندو راشٹر کا مطالبہ کرتے ہوئے انہوں نے اس اعتماد کا اظہار کیا کہ پی ایم مودی بھارت کو ہندو راشٹر قرار دیں گے۔ پرمہنس داس نے یہ بھی خبردار کیاہے کہ اگر 2 اکتوبر تک ہندو راشٹر کا اعلان نہیں کیا گیا ، اگر حکومت نے مثبت یقین دہانی نہیں کی تو میں سمادھی لے لوں گا۔