آئندہ 5 برس تک حفاظتی ماسک کی پابندی کرنا ہو گی:برطانوی طبی ماہر

لندن:برطانیہ اور امریکا کے متعدد سینئر سائنس دانوں نے اس غالب گمان کا اظہار کیا ہے کہ اگر کرونا وائرس کا پھیلاؤ جاری رہا یا نئے وائرس نمودار ہوئے تو آئندہ برسوں میں حفاظتی ماسک کا استعمال جاری رہے گا۔ برطانوی اخبار ڈیلی میل کے مطابق پروفیسر گراہم میڈلے کا کہنا ہے کہ حفاظتی ماسک کا استعمال شائد آئندہ پانچ برسوں کے دوران میں بطور عادت جاری رہے۔ پروفیسر گراہم لندن اسکول آف ہائجین اینڈ ٹروپیکل میڈیسن میں متعدی امراض کے ماہری ہیں۔برطانیہ میں سینئر کنسلٹنٹ سر پیٹرک ویلنس کا کہنا ہے کہ ماسک کا استعمال ممکنہ طور پر آئندہ موسم سرما میں بھی جاری رہے گا خواہ مملکتِ متحدہ میں تمام بالغ افراد کو کوویڈ-19 کی ویکسین دے دی جائے۔برطانوی سائنس دانوں نے اس بات کا بھی غالب گمان ظاہر کیا ہے ویکسی نیشن کی مہم مکمل ہونے کے بعد بھی شہریوں کو ممکنہ طور پر غیر معینہ مدت تک احتیاطی اقدامات اور حفاظتی تدابیر کو اپنانا ہو گا۔گذشتہ برس جون میں پہلی مرتبہ ٹرانسپورٹ کے استعمال کے دوران حفاظتی ماسک کا پہننا لازم کیا گیا۔ بعد ازاں تجارتی مراکز اور اندرونی اور بند مقامات پر بھی اس کی پابندی لاگو کر دی گئی۔ادھر امریکا میں سینئر میڈیکل کنسلٹننٹ ڈاکٹر اینٹنی ووچی کا کہنا ہے کہ تمام لوگ آئندہ برس تک حفاظتی ماسک کا استعمال جاری رکھنے پر مجبور ہوں گے۔پروفیسر گراہم میڈلے کہتے ہیں کہ میں ذاتی طور پر مستقبل میں لوگوں کو بھیڑ کی جگہاؤں یا اندرونی بند جگہاؤں پر آئندہ برسوں میں حفاظتی ماسک پہنے دیکھ کر حیران ہر گز نہیں ہوں گا، یقینا یہ بات ابھی معلوم نہیں کہ آیا حکومتیں مستقبل میں اس اقدام کو نافذ کریں گی یا نہیں ۔