ارنب گوسوامی کی جوڈیشل ریمانڈ عرضی پر نظرثانی،سماعت 9 نومبر کو متوقع

ممبئی:ری پبلک ٹی وی کے ایڈیٹر ان چیف ارنب گوسوامی کے متعلق پولیس حراست کے بجائے ، عدالتی ریمانڈ کے مجسٹریٹ کے حکم کو چیلنج کرنے والی پولیس کی درخواست پر علی باغ میں سیشن کورٹ سماعت کرے گی۔ علی باغ میں ضلع سیشن عدالت نے ہفتہ کے روز یہ حکم جاری کیا۔ عدالت کو بتایا گیا کہ ممبئی ہائی کورٹ فی الحال اس معاملہ میں گوسوامی اور دو دیگر ملزمان فیروز شیخ اور نتیش شاردا کی درخواستوں پر سماعت کر رہی ہے۔انہوں نے عبوری ضمانت طلب کی ہے اور اسے غیر قانونی قرار دیتے ہوے گوسوامی کی گرفتاری کو چیلنج کیا ہے۔ پولیس نے اپنی درخواست میں سیشن عدالت سے درخواست کی تھی کہ وہ نچلی عدالت کے حکم کو کالعدم قرار دے اور تینوں ملزموں کو ان کی تحویل میں بھیجے۔ خیال رہے کہ گوسوامی کو بدھ کے روز ان کی رہائش گاہ سے 53 سالہ ڈیزائنر نائک کو مبینہ طور پر خودکشی کےلیے اکسانے کے الزام میں گرفتار کیا گیا تھا۔ گوسوامی علی باغ پولیس اسٹیشن لے جائے گئے اور بعد میں چیف جوڈیشل مجسٹریٹ سنونینا پینگل کے سامنے پیش کیے گئے۔مجسٹریٹ نے بدھ کی شب یہ حکم جاری کرتے ہوئے ان تینوں کو پولیس تحویل میں بھیجنے سے انکار کردیا اور انہیں 18 نومبر تک عدالتی تحویل میں بھیج دیاتھا۔ علی باغ پولیس نے گوسوامی سے تفتیش کرنے کے لئے 14 دن کی حراست کا مطالبہ کیا ہے۔ واضح ہو کہ گوسوامی کو فی الحال ایک مقامی اسکول میں رکھا گیا ہے ، جسے علی باغ جیل کے لیے کووڈ- 19 کا مرکز بنایا گیا ہے۔ انوے نائک اور ان کی والدہ نے گوسوامی کی کمپنی کے واجبات کی عدم ادائیگی پر مبینہ طور پر 2018 میں خودکشی کرلی تھی ۔