آندھراپردیش کے ایم ایل اے کے بیٹے کو ایئرپورٹ پر نہیں ملی انٹری،تو رکوادی پانی کی سپلائی

امراوتی: ایم ایل اے سے زیادہ رعب تو ان کے رشتہ داروں کوہوتا ہے۔ اب آندھرا پردیش کے ایم ایل اے بی کروناکر ریڈی کے بیٹے ابھینے ریڈی کا معاملہ سامنے آیا ہے۔ تروپتی کے رینی گنٹا ہوائی اڈے کے منیجر سنیل کے ساتھ ایم ایل اے کے بیٹے کے جھگڑے کے بعد پانی کی سپلائی بند کر دی گئی۔ریڈی آندھرا پردیش میں حکمراں یوجنا شرمیکا ریتھو کانگریس پارٹی (وائی ایس آرسی پی) کے لیڈر ہیں۔ تروپتی کا رینیگنٹا ہوائی اڈا ایک بین الاقوامی ہوائی اڈہ ہے جو ائیرپورٹ اتھارٹی آف انڈیا (اے اے آئی) کے ذریعے چلایا جاتا ہے۔اس ہفتے کے شروع میں آندھرا پردیش کے وزیر بی ستیہ نارائن راؤ کے استقبال کے لیے تروپتی ہوائی اڈے پر گئے۔ جب انہیں اندر جانے کی اجازت نہیں دی گئی تو وہاں تعینات اہلکاروں سے ہاتھا پائی ہو گئی۔ وزیر ستیہ نارائن کبڈی مقابلے کی اختتامی تقریب میں شرکت کے لیے تروپتی گئے تھے۔راؤ کے ساتھ تروملا تروپتی دیوستھانمس (ٹی ٹی ڈی) کے صدر وائی وی سبا ریڈی بھی تھے۔ ریڈی ستیہ نارائنا اور سبا ریڈی کو لینے ایئرپورٹ پہنچے تھے۔ ہوائی اڈے کے منیجر سنیل نے ابھینئے ریڈی اور اس کے دوست کو اندر جانے سے روک دیا تھا۔ اس کے بعد ریڈی اور سنیل کے درمیان گرما گرم بحث ہوئی۔ اس سے ریڈی ناراض ہو گئے اور ہوائی اڈے اور وہاں کے عملے کی رہائش گاہوں کو پانی کی سپلائی روک دی۔دوسری جانب میونسپل کارپوریشن نے معاملے کی وضاحت کرتے ہوئے کہا کہ پائپ لائن میں رکاوٹ کی وجہ سے سپلائی میں خلل پڑا۔ وائی ایس آر سی پی لیڈران نے الزام لگایا کہ ایئرپورٹ حکام نے ریڈی کے ساتھ بدتمیزی کی۔ ہوائی اڈے کے حکام اور تروپتی میونسپل حکام نے اس معاملے پر تبصرہ کرنے سے انکار کر دیا۔