علاقائی اور عالمی بحران، بے گھر ہونے والوں میں مسلمانوں کی اکثریت

نیویارک :اقوام متحدہ نے کہا ہے کہ کورونا سے ہر چیز رک گئی تاہم اگر نہیں رکی تو وہ جنگ و خونریزی ہے۔ دنیا بھر میں بے گھر افراد کی تعداد 8 کروڑ 20 لاکھ سے زائد ہو گئی ہے۔ اقوام متحدہ کے ادارے برائے مہاجرین یواین ایچ سی آر کی رپورٹ کا المناک پہلو یہ ہے کہ بے گھر ہونے والوں کی اکثریت کا تعلق مسلمان ملکوں سے ہے۔ شام ، افغانستان، صومالیہ اور یمن میں جاری بحران اور ایتھوپیا اور موزمبیق میں تشدد کے واقعات میں اضافہ، بے گھر افراد کی تعداد میں اضافے کا سبب بنا ہے۔رپورٹ کے مطابق کورونا وبا کے باوجود تقریبا 30 لاکھ افراد بے گھر ہوئے ہیں۔ یواین ایچ سی آر کے چیف کا کہنا ہے کہ کورونا وائرس کے دوران معیشتوں سمیت ہر چیز رک گئی لیکن جنگ، تصادم ، تشدد اور امتیازی سلوک جاری ہے۔ واضح رہے کہ 2011 میں بے گھر افراد کی موجودہ تعداد کے مقابلے میں نصف سے کم یعنی4 کروڑ کے قریب تھی۔