العروۃ الوثقی(منتخب قرآنی آیات کی تشریح مع نصاب) ـ ڈاکٹر محمد رضی الاسلام ندوی

قرآن مجید اللہ تعالیٰ کی جانب سے ایک ہدایت نامہ ہے ۔ اس میں کھول کھول کر بیان کر دیا گیا ہے کہ انسانوں کو کیسی زندگی گزارنی چاہیے؟ اور کیسے اعمال انجام دینے چاہییں؟ اس میں واضح کر دیا گیا ہے کہ اللہ کا پسندیدہ دین کیا ہے؟ کون سے عقائد درست اور کون سے عقائد گم راہ کن ہیں؟ اللہ کی عبادت کے کیا طریقے ہیں؟ اس نے انسانوں کے درمیان حسنِ معاشرت کے لیے کیا تعلیمات دی ہیں؟ اور ان پر باہم کیا حقوق عائد ہوتے ہیں؟ اچھے اخلاق کیا ہیں ، جنھیں اختیار کرنا چاہیے؟ اور بُرے اخلاق کیا ہیں ، جن سے بچنا چاہیے؟ قرآن میں اس کی بھی بار بار صراحت کی گئی ہے کہ جو لوگ دنیا میں اللہ کی مرضی کے مطابق زندگی گزاریں گے وہ آخرت میں اس کے انعامات سے بہرہ ور ہوں گے اور انھیں جنت میں داخل کیا جائے گا ، جہاں ہر طرح کی نعمتیں ہوں گی اور جو لوگ دنیا میں غلط راہوں پر چلیں گے اور اللہ کی ناراضی کو برانگیختہ کرنے والے کام کریں گے وہ آخرت میں اس کی سزا پائیں گے اور انھیں جہنم میں ڈالا جائے گا ، جہاں وہ ہر طرح کی اذیتوں سے دو چار ہوں گے ۔

قرآن مجید کی تعلیمات و احکام سے واقف ہونے کے لیے اس کا سمجھنا ضروری ہے ۔ جن لوگوں کے درمیان قرآن نازل ہوا تھا وہ اس کی زبان جانتے تھے اور اسے اچھی طرح سمجھتے تھے ۔ جوں جوں وقت گزرتا گیا ، قرآنی تعلیمات سے لوگوں کی واقفیت کم سے کم ہوتی گئی اور فہمِ قرآن پر بھی پردے پڑ گئے ۔ اس صورتِ حال کا مداوا کرنے کے لیے قرآن کی تفسیریں لکھی گئیں اور مختلف زبانوں میں اس کے ترجمے کیے گئے ۔ ہمارے درمیان عربی زبان میں بہت سی تفسیریں موجود ہیں اور دنیا بھر کی زبانوں میں قرآن کے ترجمے کیے گئے ہیں اور تفسیریں بھی لکھی گئی ہیں ۔ مطلوب تو یہ ہے کہ قرآن مجید کو براہِ راست سمجھنے کی کوشش کی جائے ، اس میں غور و تدبر کیا جائے ، اس کے بحرِ معانی میں غوّاصی کی جائے اور اس سے لعل و گہر نکالنے کی سعی کی جائے ۔ لیکن جو حضرات اس کی سکت نہیں رکھتے وہ اس کے تراجم و تفاسیر سے استفادہ کر سکتے ہیں ۔ کتبِ تفسیر کا مطالعہ کرنے کا ایک فائدہ یہ بھی ہوتا ہے کہ قاری کو معلوم ہوتا ہے کہ علمائے سلف نے آیاتِ قرآنی سے کیا سمجھا ہے؟ اور ان کا کیا مفہوم اخذ کیا ہے؟

زیرِنظر کتاب قرآن مجید کے منتخب مقامات کے اجتماعی مطالعہ کی روداد پیش کرتی ہے ۔ اس میں پچپن (55) اسباق ہیں ۔ جن آیات کا انتخاب کیا گیا ہے ان میں اسلام کے بنیادی عقائد (توحید ، رسالت ، آخرت ) ، معاشرت ، اخلاقیات ، جنت ، جہنم اور دعا کے مضامین آئے ہیں ۔ پہلے ان آیات کا اجتماعی مطالعہ کروایا گیا ، پھر شرکاء کو فالو اپ کا خاکہ دیا گیا ، جس کے تحت چالیس (40) عربی اور پانچ (5) اردو تفاسیر کا مطالعہ کروایا گیا اور ان کے ضروری نوٹس تیار کروائے گئے ۔ ان نوٹس کو اس کتاب میں شامل کر دیا گیا ہے ۔ عربی تفاسیر سے اخذ شدہ اقتباسات کا سادہ اور سلیس ترجمہ کر دیا گیا ہے اور حواشی میں اصل عبارتیں بھی درج کر دی گئی ہیں ۔ ہر سبق کا خلاصہ آخر میں ’نکات برائے غور‘ اور ’نکات برائے عمل‘ کے ذیلی عناوین کے تحت درج کیا گیا ہے ۔

اس کتاب کے مرتب جناب محمد عبد اللہ جاوید کی تعلیم اگر چہ عصری اداروں میں ہوئی ہے ، لیکن اسلامیات کا ان کا اچھا مطالعہ ہے ۔ انھوں نے مرحوم ڈاکٹر محمدعبد الحق انصاری ، سابق امیر جماعت اسلامی ہند کے ادارے ’مرکز برائے مذہبی تحقیقات و رہ نمائی‘ (CRSG) علی گڑھ میں رہ کر عربی زبان کی بھی اچھی صلاحیت پیدا کرلی تھی ۔ وہ تحریر و تصنیف کا بھی عمدہ ذوق رکھتے ہیں ۔ دینی موضوعات پر ان کے مضامین مختلف رسائل و مجلات کی زینت بنتے رہے ہیں اور ان کی کئی کتابیں بھی شائع ہوئی ہیں ۔ وہ جماعت اسلامی ہند ، حلقۂ کرناٹک کے امیر رہے ہیں ۔ بعد میں انھوں نے خود کو تعلیمی و سماجی کاموں کے لیے وقف کرلیا ہے اورایک اکیڈمی قائم کرکے متنوع خدمات انجام دے رہے ہیں ۔ دو بر س سے زائد عرصہ سے وہ ملت کے عام نوجوانوں کے لیے اجتماعی مطالعۂ قرآن کی مجلسیں منعقد کرتے ہیں ۔ مذکورہ بالا تجربہ انھوں نے ابتدائی چھ (6) ماہ کے عرصے میں کروایا تھا ۔ یہ پروگرام اب بھی جاری ہے ۔

زیر نظر کتاب مطالعۂ قرآن کا ایک منفرد نہج پیش کرتی ہے ۔ اس انداز سے قرآن کے دیگر مقامات کا بھی مطالعہ کیا جا سکتا ہے ۔ یہ کتاب تحریکی کارکنوں کے ساتھ عام مسلمانوں کے لیے بھی قیمتی سرمایہ ہے ۔ امید ہے ، وہ اس سے بھر پور فائدہ اٹھائیں گے ۔
اللہ تعالیٰ سے دعا ہے کہ فاضل مرتب کو اس کے اجر سے نوازے اور اس کا فائدہ عام کرے ۔ آمین ، یا رب العالمین !
صفحات : 570 ( بڑا سائز)
قیمت : 600 روپے
ناشر : وہائٹ ڈاٹ پبلشرز نئی دہلی
موبائل : 8447622919_91+
یہ کتاب مرکزی مکتبہ اسلامی پبلشرز نئی دہلی سے بھی مل سکتی ہےـ