آگرہ:وجے دشمی پرتاج محل میں شیو چالیسہ کے پاٹھ کے بعد بھگواپرچم لہرایاگیا،سکیورٹی محکمہ میں افراتفری

آگرہ:وجے دشمی کے موقع پر ہندووادی شدت پسند تنظیم کے کارکن نے تاج محل احاطہ میں بھگوا پرچم لہراتے ہوئے شیو چالسہ کا پاٹھ کرکے اشتعال انگیزی انجام دی۔ جب یہ خبر سیکورٹی اداروں کو پہنچی،تو ہنگامہ بپا ہوگیا۔ سی آئی ایس ایف کے اہلکار نے نوجوان کو پکڑ لیا، لیکن پوچھ گچھ کے بعد اسے چھوڑ بھی دیاگیا۔ بھگواپرچم لہرانے کی ویڈیو سوشل میڈیا پروائرل بھی کی جارہی ہے ہندوستانی سیاحوں کے علاوہ تاج محل دیکھنے کے لئے کئی غیر ملکی موجود تھے، اس لیے سکیورٹی کا نظام سخت ہے۔ سی آئی ایس ایف کو یہاں سکیورٹی انتظامات کی ذمہ داری دی گئی ہے۔اتوار کے روز ہندو جاگرن منچ کا کارکن وجے دشمی پر بھگوا پرچم لے کر تاج محل احاطہ میں داخل ہوا۔ اس نے وہیں شیو چالیسہ کا پاٹھ کیا ۔باغ میں واقع ایک بنچ پر کھڑے ہو کر بھکوا پرچم لہرایا۔ نوجوان کی شناخت ہندو جاگرن منچ یوتھ کے ضلعی صدر گورو ٹھاکر کے طور پر ہوئی ہے۔ گورو کے مزعومہ خیالات کے مطابق یہ شیو مندر ہے ، لہٰذا اس نے شیو چالیسا کے بعد بھگوا پرچم لہرایا ہے۔سی آئی ایس ایف کے اعلیٰ اہلکار راہل یادو نے بتایا کہ وائرل ویڈیو کی تحقیقات جاری ہے۔ تحقیقات کے بعد ہی کچھ کہا جاسکتا ہے۔خیال رہے کہ تاج محل پر زعفرانی پرچم لہرائے جانے کا یہ پہلا واقعہ نہیں ہے، اس سے قبل بھی ہندووادی تنظیموں کے کارکنان بھگوا پرچم لہراچکے ہیں ۔