اب اتراکھنڈ کے ڈاکٹر س بھی رام دیو کے خلاف ہوگئے متحرک

دہرادون: یوگا گرو کے نام سے مشہور بابا رام دیو کے خلاف ایلوپیتھک ڈاکٹروں کا اشتعال کم ہوتا دکھائی نہیں دیتا ہے۔ قومی سطح پر تنازعہ اور کچھ ریاستوں میں شکایات کے بعد اتراکھنڈ میں انڈین میڈیکل ایسوسی ایشن کی ریاستی اکائی نے اب پتن جلی گروپ کے سربراہ سوامی رام دیو کیخلاف ایف آئی آر درج کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔ ڈی جی پی اشوک کمار کو بھیجے گئے خط میں آئی ایم اے کے وکیل نے آئی ایم اے صدر اجے کھنہ کے حوالے سے بتایا ہے کہ رام دیو نے ہیلتھ کے شعبے میں خدمات انجام دینے والے لوگوں کی توہین کی ہے ، لہٰذا ان کے خلاف کارروائی کی جانی چاہئے۔ ایسوسی ایشن کے اتراکھنڈ یونٹ سے پہلے دیگر ریاستوں میں آئی ایم اے یونٹوں نے رام دیو کے خلاف کارروائی کا مطالبہ کیا ہے۔ خیال رہے کہ تنازعہ رام دیو کے اس بیان سے شروع ہوا تھا، جس میں اس نے جدید ایلوپیتھک نظام طب کو ایک ناکام اور حماقت آمیز سائنس کہا تھا۔ اس کے بعد اس تنازعہ میں متعدد موڑ سامنے آئے ، جن میں نمایاں تھا کہ رام دیو کا مرکزی وزیر صحت کو لکھا گیا خط اور آئی ایم اے کے 1000 کروڑ کا ہتک عزت کا دعویٰ تھا ۔یہ بھی قابل ذکر ہے کہ آئی ایم اے اتراکھنڈ نے یہ مطالبہ بدھ کے روز اس وقت کیا جب رام دیو نے سپریم کورٹ میں پناہ لی تھی، اور اپنے بیان کے خلاف احتجاج میں دائر کئی مقدمات کی کارروائی پر روک لگانے کا مطالبہ کیا تھا۔ بہار اور چھتیس گڑھ میں آئی ایم اے یونٹوں کے ذریعہ ایف آئی آر درج کیے گئے ، جس کے پیش نظر رام دیو کو یہ قدم اٹھانا پڑا۔ رام دیو نے اس سلسلے میں سپریم کورٹ سے درخواست کی کہ تمام ایف آئی آر دہلی منتقل کیے جائیں اور فی الحال ان پر کارروائی کے معاملات پر اسٹے لگایا جائے ۔