پانچ کروڑ سے زائد ہندوستانیوں کے پاس ہاتھ دھونے کی سہولت تک نہیں

نئی دہلی:ہندوستان میں پانچ کروڑ سے زائدہندوستانیوں کے پاس ہاتھ دھونے کا صحیح طریقے سے انتظام نہیں ہے جس کی وجہ سے ان کے کورونا وائرس سے متاثر ہونے اور ان کے ذریعہ دوسروں تک انفیکشن پھیلنے کا خطرہ بہت زیادہ ہے امریکہ میں واشنگٹن یونیورسٹی میں انسٹی ٹیوٹ آف ہیلتھ میٹرکس اینڈ اویلیویشن (آئی ایچ ایم ای ) کے محققین نے کہا کہ نچلے اور درمیانہ آمدنی والے ممالک کے دو ارب سے زائد لوگوں میں صابن اور صاف پانی کی دستیابی نہ ہونے کی وجہ سے امیر ممالک کے لوگوں کے مقابلے میں انفیکشن پھیلنے کا خطرہ زیادہ ہے۔یہ تعداد دنیا کی آبادی کی ایک چوتھائی ہے۔جرنل اینورمیٹل ہیلتھ پرسپیکٹوج میں شائع تحقیق کے مطابق افریقہ اور اوسیانا کے 50 فیصد سے زائد لوگوں کو صحیح طریقے سے ہاتھ دھونے کی سہولت نہیں ہے۔ آئی ایچ ایم ای کے پروفیسر مائیکل برائوایر نے کہاکہ کورونا انفیکشن کو روکنے کے اہم پہلوئوںمیں سے ہاتھ دھونا ایک اہم پہلوہے۔یہ مایوس کن ہے کہ بہت سے ممالک میں یہ دستیاب نہیں ہے۔ان ممالک میں صحت کی دیکھ بھال کی سہولت بھی محدود ہے۔تحقیق میں پتہ چلا کہ 46 ممالک میں نصف سے زائد آبادی کے پاس صابن اور صاف پانی کی دستیابی نہیں ہے۔ اس کے مطابق ہندوستان، پاکستان، چین، بنگلہ دیش، نائیجیریا، ایتھوپیا، کانگو اور انڈونیشیا میں سے ہر ایک میں پانچ کروڑ سے زائد لوگوں کے پاس ہاتھ دھونے کی سہولت نہیں ہے۔

    Leave Your Comment

    Your email address will not be published.*