۵-۶ فروری کوبزم صدف انٹرنیشنل کے زیر اہتمام دو روزہ ’’آن لائن خلیج اردو کانفرنس‘‘

پٹنہ/دوحہ قطر:( سمیعہ ناز ملک) علم و ادب کے فروغ کے لیے مصروف عمل ممتاز بین الاقوامی تنظیم بزم صدف انٹرنیشنل کے چیر مین شہاب الدین احمد نے گذشتہ روز دوحہ میں بزم صدف انٹرنیشنل کے زیر اہتمام دو روزہ ’’آن لائن خلیج اردو کانفرنس‘‘ کے انعقاد کا اعلان کر دیا ہے جو پانچ اور چھ فروری ۲۰۲۱ء کو منعقد ہوگی۔ کانفرنس میں خلیجی ممالک میں مقیم سو سے زائد دانشور ،شعرا و ادبا شریک ہوں گے۔ انہوں نے کہا کہ کانفرنس کے انعقاد کا مقصد خلیجی ممالک میں مقیم برصغیر کے تارکین وطن کی اردو زبان و ادب کی ترقی کے لئے کی جانے والی خدمات کو سراہنا اوران کی علمی وادبی سرگرمیوں کو اجاگر کرنا ہے۔ جب کہ اس کانفرنس سے خلیجی ممالک کے شرکا کو باہمی ثقافتی تبادلے اور ایک دوسرے کو جاننے اور سمجھنے سیکھنے کے بھی مواقع میسر آئیں گے۔
شہاب الدین احمد نے مزید کہا کہ بزم صدف انٹر نیشنل نے کورونا وبا کے باعث عائد شدہ سفری پابندیوں کے باعث کانفرنس آن لائن طور پرمنعقد کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ان کا کہنا تھا کہ خلیجی خطے میں درجنوں علمی و ادبی تنظیمیں فروغ اردو دب کے لیے سرگرم عمل ہیں جن کو بزم صدف انٹرنیشنل کی بھر پور معاونت حاصل ہے۔ کانفرنس کے انعقاد سے ہندستان اور پاکستان کے روایتی مرکز میں مقیم اردو دنیا کے لوگ ان قلم کاروں کے بارے میں جان سکیں گے۔ انہوں نے کہا کہ مذکورہ کانفرنس دنیا بھر کے اردو داں طبقے کے لئے فیس بک پر براہ راست (لائیو )نشر کی جائے گی۔ ان کا کہنا تھا کہ وباکے خاتمے کے بعد دوحہ میں بھی اسی طرح کے پروگراموں کاحسبِ سابق انعقاد کیا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ بزم صدف انٹر نیشنل کا پندرہ سے زائد ممالک جن میں خلیجی ممالک اور برصغیر کے علاوہ یورپ ، شمالی امریکہ ، آسٹریلیا بھی شامل ہیں ،فروغ علم و ادب کے لیے کوشاں ہے جب کہ حال ہی میں اردو ادب کی خواتین ادیبوں کے لئے ’’بین الاقوامی خواتین ادبی فورم‘‘ شروع کیا گیا ہے۔
بزم صدف انٹر نیشنل کے ڈائرکٹر پروفیسر صفدر امام قادری نے اس دو روزہ کانفرنس کی تفسیلات بتاتے ہوئے واضح کیا کہ پہلے دن خلیج کے ملکوں میں اردو کی ادبی صورت حال سے واقفیت حاصل کرنے کے لیے سے می نار کا انعقاد کیا گیا ہے جس میںقطر، کویت، بحرین، دوبئی،عمان اور سعودی عرب سے منتخب ادبا ،شعرا اور ادبی تنظیموں کے سربراہوں کو اظہارِ خیال کی زحمت دی جائے گی۔ ۶ فروری کو خلیج کی سطح پر ایک نمایندہ عالمی مشاعرے کے انعقاد کا بھی اعلان کیا گیا ہے جس میں ان ملکوں سے تین درجن سے زائد شعرا شرکت کریں گے۔