26 جنوری کیس:سپریم کورٹ نے ششی تھرور اور سینئر صحافیوں کی گرفتاری پر روک لگادی

نئی دہلی:سپریم کورٹ نے کانگریس رہنما ششی تھرور اور سینئر صحافیوں کی گرفتاری پر پابند عائد کردی ہے۔ جن لوگوں کو اعلی عدالت نے راحت دی ہے ان میں کانگریس کے رہنما ششی تھرور کے علاوہ صحافی راجدیپ سردیسائی ، اننت ناتھ ، پریش ناتھ ، ونود جوس ، مرینال پانڈے اور ظفر آغا شامل ہیں۔ اس کے علاوہ یوپی سمیت دیگر ریاستوں میں درج ایف آئی آر کو منسوخ کرنے کے مطالبہ پر بھی سپریم کورٹ نے نوٹس جاری کیا ہے۔ یوم جمہوریہ کے موقع پر زرعی قانون کی مخالفت میں کسانوں کی ٹریکٹر پریڈ پر کے دوران ہوئے تشدد پر گمراہ کن ٹویٹس کے الزام میں اپنے خلاف درج ایف آئی آر کو لے کرکانگریس کے ممبر پارلیمنٹ ششی تھرور اور صحافی راج دیپ سردیسائی نے گذشتہ ہفتے سپریم کورٹ میں پناہ لی تھی۔ صحافی مرینال پانڈے ، ظفر آغا ، پریش ناتھ اور اننت ناتھ نے بھی ان ایف آئی آر کے خلاف سپریم کورٹ کا رخ کیا تھا۔ دہلی پولیس نے 30 جنوری کو تھرور ، راج دیپ ، ’کارواں‘ میگزین اور دیگر کے خلاف مقدمہ درج کیا تھا۔ اس سے قبل نوئیڈا پولیس نے دہلی میں ٹریکٹر پریڈ کے دوران تھرور اور چھ صحافیوں پر تشدد اور دیگر الزامات کے خلاف بغاوت کا مقدمہ درج کیا تھا۔ مدھیہ پردیش پولیس نے دہلی میں ٹریکٹر پریڈ کے دوران تشدد پر گمراہ کن ٹویٹس کرنے کے الزام میں تھرور اور چھ صحافیوں کے خلاف بھی مقدمہ درج کیا ہے۔