Home قومی خبریں ہندوستانی عوام ایسے طاقتوں کو صفحہ ہستی سے مٹادیں جو ملک کو توڑنے کے درپے ہیں: مولاناعرفی قاسمی

ہندوستانی عوام ایسے طاقتوں کو صفحہ ہستی سے مٹادیں جو ملک کو توڑنے کے درپے ہیں: مولاناعرفی قاسمی

by قندیل

ہندوستانی عوام ایسے طاقتوں کو صفحہ ہستی سے مٹادیں جو ملک کو توڑنے کے درپے ہیں: مولاناعرفی قاسمی
                                                                                                                                                                (نئی دہلی8دسمبر (قندیل نیوز
گجرات کے انتخابی حالات اور اس میں اشتعال انگیزی اور الیکشن کمیشن کی خاموشی پر اظہار تشویش کرتے ہوئے آل انڈیاتنظیم علمائے کے حق کے قومی صدر مولانامحمد اعجاز عرفی قاسمی نے کہا کہ وقت آگیا ہے کہ ہندوستانی عوام ایسے طاقتوں کو صفحہ ہستی سے مٹادیں جو ملک کو توڑنے اور یہاں کی مشترکہ تہذیب کو ختم کرنے کے درپے ہیں۔انہوں نے کہاکہ پورہ الیکشن ایک مخصوص پارٹی مذہب،ذات پات، رام مندر، علاقیت اور اشتعال انگیزی کے نام پر لڑ رہی ہے لیکن الیکشن کمیشن خاموش تماشائی بنا ہوا ہے۔ اس سے جمہوریت کی جڑیں کمزور ہوں گی اور لوگوں کا اعتماد جمہوریت اور جمہوری اداروں سے اٹھ جائے گا۔ انہوں نے موجودہ تشویش ناک حالات پر انتہائی کرب و بے چینی کا اظہار کرتے ہوئے جاری کردہ پریس نوٹ میں کہا کہ مرکز میں واضح اکثریت کے ساتھ حکومت تشکیل کرنے کے بعد بھارتیہ جنتا پارٹی کے ذریعے اشتعال انگیز اور فرقہ پرستانہ خیالات کی تشہیر اور تبلیغ کی جارہی ہے اور عام آدمیوں کے مطالبات کونظرانداز کرتے ہوئے عوام مخالف پالیسیاں وضع کی جارہی ہیں۔انہوں نے کہاکہ دہشت گردی، گؤ ہتیا، رام مندر تعمیر اورلو جہاد کے منفی پروپیگنڈے کے سہارے اس ملک کی دوسری بڑی اکثریت کے مذہبی جدبات کو ایک مخصوص پارٹی اور مخصوص آئیڈیا لوجی سے تعلق رکھنے والے قائدین، پامال اور مجروح کر رہے ہیں۔ انھوں نے کہا کہ اس کی وجہ سے ملک کے عام طبقے میں خوف و کشمکش اور بے چینی کا ماحول پایا جارہا ہے۔ انھوں نے پچھلے عام انتخابات کے حیران کن نتائج اور کمزور حزب مخالف کے تعلق سے کہا کہ اگر بی جے پی ملک کے جمہوری نظام میں بڑی پارٹی بن کر ابھری ہے، تو اس کو عوام کے اس فیصلے کا احترام کرتے ہوئے یہاں کی کثرت میں وحدت سے عبارت تہدیبی روایات کی پاس داری کرنی چاہیے اور’ سب کا ساتھ سب کا وکاس‘ کے فارمولے پرعمل کرکے دکھاناچاہیے۔ انھوں نے کہا کہ کانگریس پارٹی میں تنظیمی اور سیاسی سطح پر جو بیداری آئی ہے،اور راہل گاندھی جس طرح ایشو پر مبنی انتخابی مہم چلا رہے ہیں، اس کی وجہ سے بی جے پی کے پالیسی سازوں کی راتوں کی نیند حرام ہوگئی ہے، اس کا کھلا ہوا ثبوت گجرات کا حالیہ سیاسی منظر نامہ ہے، جس میں بی جے پی اپنے کو ہر جگہ بے بس پارہی ہے اور گجرات کے با شعور عوام بی جے پی رہ نماؤوں اور ان کی ریلیوں کا کھلم کھلا بائیکاٹ کررہے ہیں۔مولاناعرفی قاسمی اور تنظیم کے دوسرے اراکین میں شانتی وشو پریشد کے چیرمین فیض احمد فیض اور عالمی اردو فاؤنڈیشن کے صدر سید رضی الباری نے بھی جی ایس ٹی کے ذریعے ملک کے تاجروں اور عام آدمیوں کی پریشانیوں کا ذکر کرتے ہوئے کہا کہ عام اشیا کی مہنگائی نے عوام کی کمر توڑ ہی رکھی تھی، مزید جی ایس ٹی کے ذریعہ اشیا پر 28فی صد تک ٹیکس نفاذ کے فارمولے نے چھوٹے چھوٹے تاجروں اور کاروباریوں کو زبردست نقصان پہنچایا ہے، جس کی وجہ سے گجرات میں فیکٹریاں اور کل کارخانے بند ہورہے ہیں اورتعلیم یافتہ نوجوان بھی بے روزگاری کی زندگی جی رہے ہیں۔مولانا قاسمینے کہاکہ گجرات کا سماجی، سیاسی، معاشی اور تعلیمی تانا بانا ٹوٹ چکا ہے۔ بی جے پی کے پاس گجرات میں بتانے کے لئے ترقی کے نام پر کچھ نہیں ہے۔وہ ای وی ایم میں گڑبڑی کرکے اپنا بیڑا پار لگانا چاہتی ہے۔ انہوں نے کانگریس پارٹی سمیت جمہوریت میں یقین رکھنے والے تمام تنظیموں اور افراد سے اپیل کی کہ ای وی ایم پرسخت نگرانی رکھیں کیوں کہ بی جے پی ای وی ایم میں زبردست طریقے سے گڑبڑی کرے گی۔

You may also like

Leave a Comment