Home بین الاقوامی خبریں کیلاش ستیارتھی نے بچہ مزدوری کے خلاف اقوام متحدہ سے مٹنگ بلانے کا مطالبہ کیا 

کیلاش ستیارتھی نے بچہ مزدوری کے خلاف اقوام متحدہ سے مٹنگ بلانے کا مطالبہ کیا 

by قندیل

نوبل امن انعام یافتہ کیلاش ستیارتھی نے اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل سے اپیل کیا ہے کہ وہ سال 2025 تک چائلڈ لیبر ختم کرنے کی عالمی سطح پر عزم کو حاصل کرنے کے لئے تنظیم کی مختلف اکائیوں سے ملاقات کریں۔ستیارتھی نے حال ہی میں ایک انٹرویو میں بتایا کہ میں اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل سے اپیل کرتا ہوں کہ انہیں اقوام متحدہ کی یونیسیف، یونیسکو، آئی ایل او، یو این ڈی پی اور ڈبلیو ایچ او جیسی ایجنسیوں کے سربراہوں کے ساتھ ایک اعلی سطحی میٹنگ دور رس ترقی کے سلسلے میں چائلڈ لیبر کا مسئلہ حل کرنا چاہئے۔گزشتہ ماہ میں چائلڈ لیبر کے عدم تحفظ پرفورتھ گلوبل کانفرنس منعقد کیا تھا۔ اس پروگرام میں 100 سے زیادہ ممالک نے حصہ لیا تھا اور حکومتوں نے تمام طرح کے چائلڈ لیبر کو ختم کرنے کے لئے فوری طور پر اقدامات کرنے کا عہد کیا تھا۔ کیلاش ستیارتھی نے کہا کہ بچے مزدوری کی لعنت ختم کرنے اور فوری طور پر اس کے خلاف مؤثر محنت کرنے کی ضرورت ہے ۔

You may also like

Leave a Comment