ڈاکٹر کلام پورے ملک کے لیے ترغیب وتحریک کا سبب:شہپررسول

کلام صاحب توکل ،اعتماد،یقین اور عزم وحوصلے کے علمبردارتھے:عمران حسین

اردو اکادمی ،دہلی کے زیراہتمام سابق صدرجمہوریہ ڈاکٹر اے پی جے عبدالکلام کی یادمیں کل ہند قومی یکجہتی مشاعرے کا انعقاد
نئی دہلی:(پریس ریلیز)اردو اکادمی ،دہلی کے زیراہتمام بھارت رتن ،سابق صدرجمہوریہ ڈاکٹر ابوالفاخر زین العابدین عبدالکلام کی یادمیں کل ہند قومی یکجہتی مشاعرے کا انعقاد بس اسٹینڈ،خیالہ ،دہلی میں کیا گیا ،جس کی صدارت معروف شاعر طالب رامپوری نے کی ۔اس موقع پر جامعہ ملیہ اسلامیہ کے صدرشعبہ اردو پروفیسر شہپررسول نے اپنی استقبالیہ تقریر میں کہاکہ سامعین کے بغیر کوئی محفل اور کانفرنس یا مشاعرہ کامیاب نہیں ہوتا ۔میں سب سے پہلے سامعین کا استقبال کرتاہوں اورتمام شعرا وشاعرات اور مہمانان گرامی کا بھی دل کی گہرائی سے استقبال کرتاہوں ۔یہ مشاعرہ سابق صدرجمہوریہ ،بھارت رتن ،میزائل مین ڈاکٹراے پی جے عبدالکلام کی یادمیں منعقد کیاگیا ہے ۔انھوں نے کہا کہ ڈاکٹر کلام نے حصول تعلیم کے لیے اپنے بچپن میں اخبار بھی بیچے ،اس سے ملک کے عوام کو ترغیب حاصل کرنی چاہئے کہ بڑا بننے کے لیے کتنی جدوجہد کرنی پڑتی ہے۔کلام صاحب ملک کو متحدرکھنے کے لیے بھی متعدد خوش آئند اقدام کرتے رہے ۔ملک کی سیکورٹی کو یقینی بنانے کے لیے حد درجہ کوششیں کیں ۔ان کی روح قفس عنصری سے جب پرواز کررہی تھی تب بھی وہ پڑھنے لکھنے کی بات کررہے تھے ۔تعلیم کے میدان میں اتنے سرگرم اور متحرک وفعال دس پندرہ افراد مل جائیں تو ملک کا نقشہ بدل جائے گا ۔کلام صاحب ہمارے لیے ہمارے نوجوانوں کے لیے ہمارے بچوں کے لیے یکساں ترغیب اور حوصلے کا سبب ہیں ۔انہیں پڑھنے سمجھنے اور ان کے افکار پر عمل درآمد کی ضرورت ہے ۔دہلی حکومت کا بہت بہت شکریہ کہ وہ ڈاکٹر عبدالکلام کو یاد کرنے کے لیے پابند عہد ہے اور اکادمی کے تمام پروگراموں کی طرح اس مشاعرے کے انعقاد میں بھی وہ بھرپور دلچسپی لیتی رہی ۔ہمارے وزیراعلی اروندکیجریوال اور نائب وزیراعلی منیش سسودیا جی نے اردو کے فروغ کے لیے ہمیشہ سنجیدگی دکھائی ہے ۔اردواکادمی کا یہ مشاعرہ خیالہ میں منعقد ہوا ہے تاکہ دہلی کے عوام کومشاعرہ سننے کے لیے دور دراز کاسفر نہ کرنا پڑے ۔دہلی حکومت کایہ پیش رفت بھی سراہے جانے کے لائق ہے کہ وہ اکادمی کے پروگراموں کو دہلی کی مختلف جگہوں پر منعقد کراتی ہے ۔
مہمان خصوصی اور دہلی حکومت کے وزیربرائے خوراک ورسد عمران حسین نے اس موقع پر کہاکہ اردواکادمی کی پوری ٹیم بہت محنت سے کام کررہی ہے ۔میں وزیراعلی اور نائب وزیراعلی کو مبارک باد پیش کرتاہوں کہ اکادمی کی جانب سے ڈاکٹر عبدالکلام کے یوم پیدائش کے موقع پر اتنے شاندار قومی یکجہتی مشاعرے کا انعقاد کیا گیا ۔میں تما م شعرا ورشاعرات اور تمام سامعین کا استقبال کرتاہوں ۔مجھے یقین ہے کہ آپ کو یہ مشاعرہ پسند آئے گا ۔اس مشاعرے کی اہمیت اس لیے بھی ہے کہ یہ سابق صدرجمہوریہ ،بھارت رتن ،میزائل مین ڈاکٹرعبدالکلام کی یاد میں منعقد کیا گیا ہے ۔آج ہم اے پی جے عبدالکلام کو یاد کررہے ہیں ،اکادمی کو بھی مبارک باد اور شکریہ کہ اس کی وجہ سے تمام بڑی شخصیات کو سوچنے ،سمجھنے اور ان کے بارے میں سننے کا ہمیں موقع ملتا ہے ۔کلام صاحب توکل ،اعتماد،یقین اور عزم وحوصلے کے علمبردار ہیں ۔بھارت میں عبدالکلام صاحب کو فراموش نہیں کیا جاسکتا ۔انہوں نے بھارت کی زریں تاریخ رقم کی ہے ۔پوری دنیا میں اپنے ملک کے لیے مان سمان اور احترام کا جذبہ پیداکیا ۔ہمیں فخر ہے کہ ہمارے عہد میں بھی کلام صاحب جیسی شخصیت موجود تھی اور ان سے ہم سب نے بہت کچھ سیکھا ہے ۔فضول خرچی پر قابو کرنے کاگر پورے ہندوستان کو ڈاکٹر کلام صاحب نے سکھایا ۔
خیالہ علاقے کے سرگرم سماجی کارکن انورحسین نے کہاکہ دہلی حکومت کا شکرگزارہوں کہ خیالہمیں مشاعرے کا انعقاد کیا گیا ۔ڈاکٹر عبدالکلام صاحب ہم سب ہندوستانیوں کے لیے سرمایۂ افتخار اور ہماری آن بان شان ہیں ۔انہیں یاد کرکے دل خوش ہوجاتا ہے اورسر فخر سے اونچا ہوجاتا ہے ۔دہلی حکومت نے ہمیشہ ڈاکٹر کلام صاحب کو اپنارہنما اور راہبر تسلیم کیا ہے ۔کلام صاحب کے افکار و خیالات سے ہمیں بہت کچھ سیکھنا چاہیے ،ان کی کتابیں اور ان کی زندگی ہمارے لیے اپنے اندر بہت سے اسباق رکھتی ہے ۔
اس موقع پر وزیربرائے خوراک ورسدعمران حسین نے تمام شعرا وشاعرات کا استقبال گلدستے پیش کرکے کیا ۔تمام مہمانان گرامی کا استقبال پروفیسرشہپررسول اور کادمی کے اسسٹنٹ سکریٹری مستحسن احمدنے کیا ۔