قرآن اور احادیث کے احکامات پر عمل کرکے ہی زندگی کامیاب ہوسکتی ہے:حاجی منصورعلی فاروقی

علی گڑھ:15جولائی(قندیل نیوز)
ہر مسلمان کی خواہش ہوتی ہے کہ وہ زندگی میں ایک بار مکہ اور مدینہ کی زیارت کرلے۔ بہت ہی کم ایسے لوگ ہیں جن کو یہ سعادت دو یا اس سے زیادہ حاصل ہوجاتی ہے۔ ملک میں ایک ایسی بھی شخصیت ہے جنہوں نے ایک دو بار نہیں بلکہ تینتیس بار حج بیت اللہ کیاہے۔ جی ہاں، تیس اور تین، کل تینتیس بار۔ یہی نہیں بلکہ انہوں دس مرتبہ عمرہ بھی کیا ہے۔ اس شخصیت کا نام حاجی منصور علی فاروقی ہے۔ آپ کا تعلق ایک دینی اور ادبی گھرانے سے ہے۔ آپ احسن مارہروی کے شاگرد علامہ تمنا بجنوری کے فرزندہیں جنہوں نے دیوان حافظ کا منظوم اردو ترجمہ کیا تھا،تمنابجنوری فارسی اور اردو کے عالم اورشاعرتھے۔
حاجی منصور علی فاروقی دینی کاموں میں ہمیشہ بڑھ چڑھ کر حصہ لیتے ہیں۔ انہوں نے اوائل عمری ہی سے دین کی تبلیغاور بیماروں کی خدمت کو اپنا مقصد قرار دیا۔ 1962میں انہوں نے پہلی بار پانی کے جہاز سے حج کیا۔ اس کے بعد تقریبا ہر سال وہ حج یا عمرے کے لیے جاتے رہے۔ ان میں سے کچھ حج انہوں نے اپنے لیے اور کچھ دوسروں کے لیے حج بدل کے طور کیا ہے۔ حاجی منصور علی فاروقی کی ولادت 1937میں ہوئی، 1998میں علی گڑھ مسلم یونی ورسٹی کی ملازمت سے سبکدوش ہوئے۔ سبکدوشی کے بعد انہوں نے اپنا پورا وقت خدمت خلق کے لیے وقف کردیاہے۔ان کی رہائش گاہ پرہر مذہب و ملت کے افراددعا کے لیئے ہرروز بڑی تعدادمیںآتے ہیں۔
حاجی منصور علی فاروقی کہتے ہیں کہ قرآن اور احادیث کے احکامات پر عمل کرکے ہی زندگی کامیاب ہوسکتی ہے۔ وہ کہتے ہیں کہ ہمارا فرض ہے کہ اسلام کی تعلیمات کو لوگوں تک پہنچا ئیں۔ دنیا میں بھائی چارگی اور امن اسی وقت قائم ہوگا جب اسلام کی صحیح تصویر دنیا کے سامنے پیش کی جائے گی۔