عید ملن جیسے پروگراموں سے غلط فہمیوں کاازالہ ممکن ہے


جماعت اسلامی ہند حلقہ دہلی و ہریانہ کے تحت فرید آباد میں عید ملن پروگرام کا انعقاد، امیر حلقہ کا خطاب
نئی دہلی 3؍جولائی (پریس کانفرنس )جماعت اسلامی ہند حلقہ دہلی و ہریانہ کے تحت فرید آباد میں عید ملن کا پروگرام منعقد کیا گیا ۔جس میں محمد اشتیاق ناظم علاقہ ہریانہ نے افتتاحی کلمات پیش کرتے ہوئے کہا کہ عید ملن کا پروگرام بھائی چارے کے ماحول کو پروان چڑھانے کے لئے ضروری ہے ۔ہم اپنی عید کی خوشی اپنے ملک میں رہنے بسنے والے تمام باشندوں کے ساتھ مل کر مناتے ہیں ۔اس کے لئے عید ملن کا پروگرام منعقد کیا جاتا ہے ۔صدارتی خطاب کرتے ہوئے امیر حلقہ عبدالوحید نے کہا کہ عید ملن کے پروگرام سے معاشرے میں بھا ئی چارے کا ماحول پروان چڑھتا ہے ۔غلط فہمیوں کا ازالہ ہوتا ہے ۔انہوں نے کہا کہ خدا پوری کائنات کا مالک حقیقی ہے اور تمام مسلمانوں کو پوری انسانیت کی طرف خدا کا پیغام پہنچانے کی ذمہ داری دی گئی ہے ۔افسوس کی بات ہے کہ اکثر مسلمان اپنی اس ذمہ داری کی ادائیگی میں بے فکری اور لاپروائی کے شکار ہیں۔اس حقیقت کو تسلیم کرلینے کے باوجود کہ اسلام سب سے بہتر طرز حیات ہے ،برادران وطن تک اب تک اسلام کو پہنچانے میں ناکام ہیں۔قرآن کہتا ہے کہ ’’اس سے بڑھ کر ظالم کون ہوگا جس کے پاس اللہ کی طرف سے آئی ہوئی کوئی گواہی ہو اور وہ اسے چھپائے ؟اور جو کچھ تم کررہے ہو ،اللہ اس سے بے خبر نہیں ہے ‘‘۔غیر مسلموں کی اکثریت اسلام کی حقانیت کی قائل نہیں اور اس کی وجہ یہ ہے کہ اس کے ذہن میں کچھ سوالات گردش کررہے ہوتے ہیں جن کے جواب کی انہیں تلاش ہوتی ہے ۔ان کی تلاش اس وقت پوری ہو گی جب آپ اپنے پروگراموں میں برادران وطن کو مدعو کریں ان کے سامنے سوالات و جوابات کا اوپن سیشن رکھیں یہی وہ نسخہ ہے جس کے ذریعے سماج میں بھائی چارے کا ماحول بنے گا اور نفرت کا خاتمہ ہوگا ۔
اس موقع پر خلیق الزماں نے انسانی بھائی چارہ کے موضوع پر خطاب کرتے ہوئے کہا کہ مسلمان وہ قوم ہے جو پوری دنیا میں امن چاہتے ہیں اور تمام انسانوں کو آدم کی اولاد تصور کرتے ہوئے اسے اپنا بھائی تسلیم کرتے ہوئے ان کے ساتھ بھائی کی طرح برتاؤ کرتے ہیں ۔لیکن افسوس کہ سماج دشمن عناصر اس بھائی چارہ کے دشمن ہیں اور وہ پرامن ماحول کو خراب کرنے کی پوری کوشش کرتے ہیں جس میں انہیں کامیابی بھی مل جاتی ہے چونکہ ایک دوسرے سے دوری اور ایک دوسرے کے مذاہب سے عدم واقفیت کی بنا پر لوگ سماج دشمن کی کوششوں کا شکار ہوکر فضا کو پراگندہ کردیتے ہیں ۔اس لئے ضرورت اس بات کی ہے کہ مسلمان اپنے تمام تر پروگرام میں برادران وطن کی شرکت کو یقینی بنائیں اور انہیں بتائیں کہ اسلام امن و بھائی چارہ کو فروغ دینے پر یقین رکھتا ہے ۔اسلام انسانیت کی بقا چاہتا ہے وہ ایک انسان کے نا حق قتل کو پوری انسانیت کا قتل قرادیتا ہے ۔نبی ﷺ نے خانہ کعبہ کے غلاف کو پکڑ کر کہا تھا اے کعبہ تجھ سے عزیز میرے نزدیک ایک انسانیت کا خون ہے اور وہ دنیا کی کسی حصہ میں ناحق بہایا جائے ۔اس حدیث سے ثابت ہے کہ اسلامی انسانیت کو زندہ رکھنے اور بھائی چارے کے ماحول کو برقرار رکھنے کی تعلیم دیتا ہے ۔