Home خاص کالم سعودی عرب کے مفتی عبدالقوی !

سعودی عرب کے مفتی عبدالقوی !

by قندیل

فردوس جمال
شیخ عادل کلبانی سعودی عرب کے مشہور اور متنازعہ داعی ہیں،ان کی یہ تصویریں کچھ دوستوں نے مجھے انبکس کی ہیں اور تصدیق یا تردید چاہی ہےـ
یہ تصویریں ایک دن پہلے کی ہیں، تصویریں فیک نہیں ہیں،یہ سعودی عرب کے کیپٹل الریاض کی ہیں،جہاں ایک روز پہلے تاش چمپئین شپ کا افتتاح ہوا تھا،شیخ عادل اس تقریب میں مدعو تھے،ایک تصویر شیخ عادل نے اپنے ٹوئٹر اکاؤنٹ سے بھی شئیر کی ہے،العربیہ ٹی وی سے گفتگو کرتے ہوئے شیخ عادل نے نہ صرف لہو و لعب کی اس محفل میں شرکت کی تصدیق کردی ہے بلکہ اس بات کا بھی عزم کیا ہے کہ وہ تاش سیکھنا چاہیں گےـ
شیخ عادل کلبانی کون ہے؟
یہ الریاض شہر میں پیدا ہوئے،ابتدائی تعلیم عصری علوم کی حاصل کی پھر چھ سال تک سعودی ائیرلائن میں ملازمت کرتے رہے،اسی دوران دین کی طرف ان کا رجحان پیدا ہوا،مختلف علماسے چلتے پھرتے انہوں نے قرآت وغیرہ کا علم حاصل کیا،ان کی آواز اچھی تھی کچھ عرصہ یہ خانہ کعبہ میں نماز تراویح کے امام رہےـ
پھر انہیں خانہ کعبہ کی امامت سے معزول کیا گیا،گانا بجانا اور مرد و زن کے اختلاط کے یہ قائل تھے،2010ء میں انہوں نے گانے بجانے کی حلت پر باقاعدہ فتوی بھی دے ڈالا جس کے بعد ان کے خلاف امام کعبہ شیخ عبدالرحمن سدیس،مفتی اعظم شیخ عبدالعزیز آل شیخ، شیخ صالح الحيدان وغیرہ کے فتاوی آئے ،امام کعبہ شیخ شریم نے عادل کلبی کے فتوی کے رد میں ایک شعری قصیدہ بھی "قصیدہ عتاب” کے نام سے لکھاـ
لہذا شیخ عادل کلبانی کی طرف سے تاش سینٹر کی افتتاحی تقریب میں حاضری کوئی غیر متوقع عمل نہیں ہے،جہاں تک تاش کھیلنے کا تعلق ہے یہ بھی سعودی عرب میں کوئی نئی بات نہیں ہے،جو یہاں مقیم ہیں وہ بخوبی جانتے ہیں کہ سعودینز تاش کے شوقین ہیں،قہوہ خانوں میں یہ گیم دستیاب ہوتی ہے،ہم گذشتہ سات آٹھ سال سے اس چیز کا مشاہدہ کرتے آ رہے ہیں،یہ سمپل تاش ہوتی ہے اس میں جوا وغیرہ نہیں ہوتا ہےـ
آخری بات،ہمارا منہج اور ہمارا ماننا یہ ہے کہ غلط کام امام کعبہ کرے یا عام مسلمان، بہرحال اس کام کو جسٹیفائی نہیں کیا جائے گا،دین اسلام کسی فرد،خطہ اور ملک کی سوچ و فکر کا نام نہیں ہے،اسلام قرآن و حدیث کا نام ہے جو دائمی سرمدی اور ابدی ہے،ہم تو جلیل القدر ائمۂ اربعہ میں سے کسی کا فتوی،کسی کی بات ،کسی کا عمل قرآن و سنت سے میل نہ کھاتا ہو تو اسے دیوار پہ مارنے کے قائل ہیں کلبانی ولبانی کے خلاف شرع فتووں کی کیا حیثیت ہےـ
بھئی وہ کوئی اور ہوں گے جو اپنے ذاکروں کا پنکھوں میں کمندیں ڈالنے،اپنے ولیوں کا چمگادڑ کی طرح کنویں میں الٹا لٹکنے اور اپنے بزرگوں کے ہر مضحکہ خیز کام اور فتوے کی توجیہ پیش کرکے انہیں بچاتے ہوں گے،ہم تو اس معاملے میں بڑے گستاخ واقع ہوئے ہیں ـ
ہر قوم میں مفتی عبدالقوی جیسے مفتی موجود ہوتے ہیں، عربوں میں بھی ایسے کئی نمونے موجود ہیں،ان کا عمل قوم کے اہل علم کی اجتماعی فکر کا ترجمان نہیں ہوتا ہےـ

You may also like

Leave a Comment