Home نظم سخت دشوار ہے انسان کا انساں ہونا

سخت دشوار ہے انسان کا انساں ہونا

by قندیل
تازہ ترین سلسلہ(03)

فضیل احمد ناصری

استاذحدیث وفقہ جامعہ امام محمدانورشاہ دیوبند

 گرچہ ہر دور کا اک جرم ہے شیطاں ہونا
عہدِ نَو کا ہے بڑا جرم مسـلمـاں ہونا
 
شاخِ برگد پہ گلابوں کا ہے کھلنا آساں
سخت دشوار ہے انسان کا انساں ہونا
 
جانور کو وہ ترقی کہ خدا بن بیٹھے
شیوۂ کفـــر بنا، بنــدۂ حیــواں ہونا
 
ہے خداوندِ گلستاں کو عداوت ہم سے
شاید اس باغ کی قسمت میں ہے ویراں ہونا
 
ہم ہیں باقی تو یہ عالم بھی رہے گا باقی
باعثِ ارض و سما، صاحبِ ایماں ہونا
 
رعبِ مغرب سے یہ حالت ہے مسلمانوں کی
سبـبِ ننـگ بنا، حــــــــــاملِ قرآں ہونا
 
کاش امت کو کوئی نیند سے کردے بیدار
چھوڑ دے غیر کے دربار کا درباں ہونا
 
بادِ صـَرصـَر بھی ہمارے لیے اک نعمت ہے
جـرأتِ شمـع بڑھا دیتـا ہے طوفاں ہونا
 
اپنے کردار سے اسـلام کے داعی بنیے!
چھـوڑیے غیـــر پہ انگشـت بدنداں ہونا
 
متحـــد ہو کے زمــانے کو بدلیے عنبر! 
کوئی اچھا نہیں، اوراقِ پریشاں ہونا

You may also like

Leave a Comment