Home قومی خبریں اٹھارہ سال بعدطارق انورکوہواغلطی پر ملال

اٹھارہ سال بعدطارق انورکوہواغلطی پر ملال

by قندیل

نئی دہلی22دسمبر(قندیل نیوز)
نیشنلسٹ کانگریس پارٹی(این سی پی) کے اہم بانی آنجہانی پی اے سنگما اور شرد پوار کے ساتھ بغاوت کرنے کے18سال کاطویل عرصہ گزرنے کے بعدمسٹر طارق انور نے اس بات کو تسلیم کیا کہ کانگریس کی سابق صدر محترمہ سونیا گاندھی کو ’غیر ملکی نژاد‘ کہنے کا موضوع اٹھانا اور ہندوستان کے وزیراعظم بننے کے ان کے حق کی مخالفت کرنا ایک غلطی تھی جس کے بعدخودہندوستان کے لوگوں نے اپنی سیاسی سمجھ مسترد کردیا۔واضح ہوکہ مسٹرطارق انوربی جے پی کے خلاف ہمیشہ اپوزیشن کے اتحادکی بات کرتے رہے ہیں لیکن ان کی پارٹی میں ان کااثرکتناہے ،اس کااندازہ اس سے لگایاجاسکتاہے کہ بہاراورگجرات الیکشن میں این سی پی نے اپوزیشن کے خلاف الیکشن لڑا۔ اپنے ایک انٹرویو میں مسٹر طارق انور نے کہا،’’وہ ایک غلط فیصلہ تھا‘۔دراصل لوک سبھا کے 2009 کے انتخابات کے بعدآنجہانی پی اے سنگمااپنی نومنتخبہ رکن پارلیمنٹ بیٹی اگاتھا سنگما کے ساتھ محترمہ سونیا گاندھی سے ملے اور ان سے دس سال پہلے 1999میں جو ہوا اس کے لئے معافی مانگی۔

You may also like

Leave a Comment