اردواکادمی ،دہلی کے زیراہتمام سالانہ ایوارڈ تقریب برائے ۱۸۔۲۰۱۷ء کا انعقاد


زبان وادب اورصحافت کی خدمت کرنے والی مختلف شخصیات کواعزازات سے نوازاگیا
نئی دہلی :اردواکادمی ،دہلی کے زیراہتمام سالانہ ایوارڈ تقریب برائے ۱۸۔۲۰۱۷کا انعقادآڈیٹوریم ،دہلی سکریٹریٹ ،آئی پی ایسٹیٹ ،نئی دہلی میں ہوا۔اس پروگرام میں استقبالیہ تقریرکرتے ہوئے اردو اکادمی کے وائس چیئرمین پروفیسرشہپررسول نے کہاکہ اردو اکادمی ادب وادب کی حوصلہ افزائی کرتی رہی ہے ۔اردو اکادمی ہرسال ادیبوں کی خدمت میں ایوارڈ پیش کرتی ہے ۔قلم گویدکہ من شاہ جہانم،یہ پروگرام قلم کاروں کاجشن ہے ،ادیبوں نے اپنی عمر کا بڑا حصہ ادب کی بیش بہاخدمات میں صرف کی ہیں ۔ادب کی مختلف شاخیں ہیں ،ان کی خدمات کااعتراف کرنا اردو اکادمی کا فرض ہے ۔وزیراعلی اور نائب وزیراعلی اردو تہذیب وادب اورزبان کی پذیرائی کرتے رہتے ہیں اورہمیشہ اردو اکادمی کی حوصلہ افزائی کرتے ہیں ۔میں اس پروگرام میں موجودنائب وزیراعلی منیش سسودیا، تمام ایوارڈ یافتگان اورحاضرین کاپرخلوص استقبال کرتاہوں ۔پروگرام کے مہمان خصوصی اور دہلی کے نائب وزیراعلی منیش سسودیا نے کہا کہ دراصل یہ ایوارڈ ادیبوں کی خدمات کا اعتراف ہے ۔میں تمام ایوارڈ یافتگان ادیبوں کا شکریہ اداکرتاہوں کہ آپ سب نے اردو اکادمی کا ایوارڈ قبول کیا۔میری کوشش ہوتی ہے کہ تمام زبانوں بشمول اردوکے فروغ کو یقینی بنایا جائے ۔اسکولوں اور مدرسوں میں اسناد کے حصول کے لیے تعلیم دی جاتی ہے ،مگرادب زندگی کا سلیقہ سکھاتی ہے ۔آپ سب نے اردو کی ناقابل فراموش خدمات انجام دی ہیں جس کا اعتراف ہمارا فرض ہے ۔دہلی حکومت نے یہاں ۱۵زبانوں کی اکادمیاں قائم کی ہیں ۔ملک کی تمام زبانوں کی اکادمیاں ہمیں قائم کرنی ہیں ۔مجھے امید ہے کہ تمام اکادمیاں عنقریب اردواکادمی کی طرح متحرک وفعال ہوجائیں گی ۔جو کام شاعر ،تخلیق کاراور ڈرامہ نگار کرتے ہیں وہ بہت اہم ہیں ۔ملک کی تاریخ میں اردوثقافت میلہ اردواکادمی کا بڑا کارنامہ ہے ۔دہلی حکومت نے نئی نسل تک اردو کو پہنچانے کی بھرپورکوشش کی ہے ۔اس طرح کے مزیدپروگرام ہم کرتے رہیں گے،ان تمام لوگوں کی قدرکرتے ہیں ،جو اردو کی خدمات انجام دے رہے ہیں اوراردوکے فروغ کو یقینی بنارہے ہیں۔
اس موقع پراردواکادمی کے سکریٹری ایس ایم علی نے کہاکہ نائب وزیراعلی ، تمام ایوارڈیافتگان اورحاضرین وسامعین کا بہت بہت شکریہ کہ آپ سب اردو اکادمی کے پروگراموں میں خوش دلی کے ساتھ شرکت کرتے ہیں ۔دہلی کے وزیراعلی اورنائب وزیراعلی کا بہت بہت شکریہ کہ وہ اردو کے فروغ کے لیے کمربستہ اور عہدبستہ ہیں ،اردواکادمی کے تمام پروگراموں کو سراہتے ہیں اور شریک بھی ہوتے ہیں ۔اس پروگرام کی نظامت اطہرسعیداور ریشما فاروقی نے کی ۔
اس موقع پر دہلی اردو اکادمی کے وائس چیئرمین پروفیسرشہپررسول نے نائب وزیراعلی کا استقبال گلدستہ پیش کرکے کیا اور نائب وزیراعلی نے تمام ایوارڈ یافتگان کو گلدستہ پیش کیا ۔خیال رہے کہ سالانہ ایوارڈ تقریب میں کل ہندبہادرشاہ ظفر ایوارڈ معروف ادیب مجتبی حسین کو دیا گیا ۔اس ایوارڈ کی رقم ڈیڑھ لاکھ روپے ہے،پنڈت برجموہن دتاتریہ کیفی ایوارڈڈاکٹرفیروزدہلوی کی خدمت میں پیش کیا گیا ،اس ایوارڈ کی رقم بھی رقم ڈیڑھ لاکھ روپے ہے۔ایوارڈ برائے تحقیق وتنقید پروفیسرحنیف کیفی کو،ایوارڈ برائے تخلیقی نثرڈاکٹر خالدجاویدکو،ایوارڈ برائے شاعری پروفیسرخالد محمود،ایوارڈ برائے صحافت منصورآغا،ایوارڈ برائے ترجمہ نگاری عبدالنصیب خان اور ایوارڈ برائے ڈراما ڈاکٹر ایم سعید عالم کو پیش کیا گیا ۔ان ایوارڈ ز کی رقم ۵۰ ۔۵۰ ہزارروپے ہے۔ تمام ایوارڈ یافتگان کی خدمت میں نائب وزیراعلی منیش سسودیا نے شال ،سند،مومنٹو اور نقدانعامات سے نوازا۔